بنیادی حقوق کیلئے لڑنے والے خواجہ سراوں نے الیکشن لڑنے کا فیصلہ کر لیا

بنیادی حقوق کیلئے لڑنے والے خواجہ سراوں نے الیکشن لڑنے کا فیصلہ کر لیا


اسلام آباد ( 24نیوز )   بنیادی حقوق کے لیے لڑنے والے خواجہ سراوں نے الیکشن لڑنے کا فیصلہ کر لیا۔ قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 53 سے انتخاب لڑنے والے خواجہ سرا ندیم کشش نے کہا ہے کہ  جب تک خواجہ سراوں کا نمایندہ اسمبلی میں نہیں ہوگا مسائل حل نہیں ہوں گے۔

  قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 53 سے انتخاب لڑنے والے خواجہ سرا ندیم کشش کہتےہیں جب تک خواجہ سراوں کا نمایندہ اسمبلی میں نہیں ہوگا مسائل حل نہیں ہوں گے ضروری ہے کہ وہ سیاسی عمل کا حصہ بنیں۔قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 53 سے عام انتخابات میں کھڑے ہونے والے خواجہ سرا ندیم کشش کا کہنا ہے کہ میں خود عوام کے پسماندہ ترین طبقے سے تعلق رکھتی ہوں۔ مجھے معلوم ہے کہ بھیک مانگنے اور شادیوں پر ناچ گانے والے طبقہ سے تعلق رکھنے والی خواجہ سرا انتخابات میں حصہ لیتی ہے تو بہت کم افراد اس کی حمایت میں کھڑے ہوتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:تحریک انصاف کے رہنما فواد چوھدری کو الیکشن لڑنے کی اجازت مل گئی 

تبدیلی کے لیے ضروری ہے کہ وہ سیاسی عمل کا حصہ بنیں تاکہ سیاست کے ذریعہ اپنی کمیونٹی کے لیے آواز اٹھائیں۔ جب تک خواجہ سرا برادری سے کوئی نمائندہ اسمبلی میں نہیں ہوگا تب تک ان کے مسائل کا حل ممکن نہیں۔ندیم کشش کے مطابق خواجہ سراؤں کے لیے نشستیں مختص کی جانی چاہیں اگر میں جیت گئی تو اپنی خواجہ سرا برادری کے لیے بہترین قانون سازی کراؤں گی خواجہ سراؤں کی صحت، تعلیم اور ان کے روزگار کے لیے کام کروں گی

خواجہ سراوں کی بطور امیدوار الیکشن میں شرکت پاکستان کی جمہوری عمل میں ایک بڑی کامیابی ہے۔

شازیہ بشیر

   Shazia Bashir   Edito