بچے "بھینسوں کے باڑے "میں تعلیم حاصل کرنے پرمجبور

بچے


شکر گڑھ(24نیوز)ایسے پڑھے گا پنجاب تو کیسے بڑھے گا پنجاب؟تبدیلی سرکار کا چہرہ شکرگڑھ کےسکول پنڈوری ڈھونڈا میں بے نقاب ہوگیا ،با اثر افرادنےسکول اور راستے پر گندا پانی چھوڑ دیا،بچے "بھینسوں کے باڑے "میں تعلیم حاصل کرنے پرمجبورہوگئے ۔ 

 شکرگڑھ کے نواحی گاؤں پنڈوری ڈھونڈا کا گورنمنٹ پرائمری سکول بھینسوں کے باڑے کا منظر پیش کررہا ہے،جہاں بچوں کو صاف ستھرا ماحول ملنا تھا وہاں  ایک ندی کا منظر  بنا ہوا ہے،ایسی ندی جس میں گندا پانی بدبو پھیلا رہا ہے، بچے پڑھنا تو دور کی بات سکول میں داخل بھی نہیں ہوسکتے،بااثر افراد نے گاؤں کا گندا پانی راستے اورسکول میں چھوڑ رکھا ہے۔

سکول میں چار فٹ تک پانی کھڑا ہے،کلاس رومز میں بیٹھنے کی جگہ نہ ہونے کی وجہ سے طالبعلم " بھنسیوں کے باڑے میں" دو سال سے تعلیم حاصل کرنے پرمجبور ہیں،بچوں نے ہاتھ کھڑے کرکے احتجاج کیا۔ وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار اور وزیرتعلیم سے مطالبہ کیا کہ وہ پڑھنا چاہتے ہیں لیکن ان کے مسائل حل کئے جائیں۔

اہل علاقہ کے مطابق بااثر افراد کے خلاف ڈی سی نارووال سمیت اعلی حکام کو کئی مرتبہ درخواستیں دیں مگرکوئی شنوائی نہیں ہوئی۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer