نعت گوئی کرنیوالا کٹر ہندو شاعر

نعت گوئی کرنیوالا کٹر ہندو شاعر


لاہور( 24نیوز )آپ نے یہ تو سنا ہوگا کہ مسلمان اپنے مہربان نبی کی مدح سرائی کرتے ہیں،ان کی شان میں قصیدے گائے ،نعتیں لکھیں لیکن آپ نے یہ کبھی نہیں سنا ہوگا کہ کسی غیر مسلم نے یہ کام کیا ہوگا۔
جی ہاں پنڈت رام ساگر پرتھوی پال تری پاتھی ایک ایسے شاعر ہیں جو ایک 68 سالہ کٹر ہندو ہیں لیکن نئی آخرالزمان حضرت محمد صلی اللہ علی وسلم کے عاشق ہیں، ساگر تری پاتھی کے نام سے مشہور یہ شخص رام مندر کی جگہ بننے والے ایودھیا کے رام لالہ ونیاس ٹرسٹ کے سرپرست اور وشوا براہمن پریشد کے صدر ہیں لیکن انہوں نے نام ایک شاعر کی حیثیت سے کمایا۔

یہ بھی پڑھیں:  ریفری کے فرائض انجام دینے والی پہلی مسلم خاتون
ساگر تری پاتھی ہر مشاعرے کا آغاز حمد اور نعت سے کرتے ہیں، ان کا کہنا ہے کہ اسی نعت گوئی کی بدولت ان ضمیر زندہ ہے، ساگر تری پاتھی کے گھر پر جہاں درجنوں ایوارڈ سجے ہیں،وہیں گیتا اور دیگر ہندو کتابوں کے ساتھ قرآن پاک ، اس کی تفسیر اور نئی پاک صلی اللہ علی وسلم کی حیات طیبہ کے حوالے سے بھی کتابوں کی ایک بڑی تعداد موجود ہے۔
صرف یہی نہیں ساگر ہندووں کا تہوار ہو یا مسلمانوں کا، دونوں کی بھرپور انداز میں مناتے ہیں۔ اپنی شاعری کی کتاب سے آمدن مسلمان بچوں کی تعلیم کے لئے عطیہ کرتے ہیں۔
ساگر کا کہنا ہے کہ حضرت محمد صلی اللہ علی وسلم صرف مسلمانوں کے ہی نبی نہیں، بلکہ پوری انسانیت کے لئے مشعل راہ ہیں،میں نے بھی ان سے کچھ فیض حاصل کیا ہے،کہتے ہیں جس دن انا اور سیاست ختم ہوگئی۔بابری مسجد کا مسئلہ حل ہو جائے گا۔