عوامی رد عمل آنے کے بعد حکومت کو پیچھے ہٹنا پڑا: سراج الحق

عوامی رد عمل آنے کے بعد حکومت کو پیچھے ہٹنا پڑا: سراج الحق


 اسلام آباد (24نیوز):امیرِ جماعت اسلامی سراج الحق نے تحریک لبیک کے خلاف آپریشن کے معاملے پر تحقیقات کا مطالبہ کردیا۔انہوں کہا کہ حکومت پر بھروسا نہیں، عدالت حقائق منظرعام پرلانے میں مدد کرے۔

امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے فیض آباد دھرنا آپریشن میں جاں بحق ہونے والے نوجوان راجا زوہیب زاہد کے لواحقین سے تعزیت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ زاہد حامد کے استعفی کا مطالبہ مان لیا جاتا تو یہ صورتحال پیدا نہ ہوتی، عوامی رد عمل آنے کے بعد حکومت کو پیچھے ہٹنا پڑا،   سراج الحق نے معاملے کی عدالتی تحقیقات کا مطالبہ کردیا۔ جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق نے کہا کہ  سیاستدانوں کا کام سیاست کرنا ہے، فیصلے دینا عدالت کا کام ہے، انہوں نے کہا کہ نواز شریف کو نااہلی کے بعد جی ٹی روڈ کا راستہ اختیار نہیں کرنا چاہئے تھا۔

امیر جماعت اسلامی کا کہنا تھا کہ حلف نامے میں تبدیلی ایک سوچی سمجھی سازش تھی، اس سازش میں بڑے اور با اثر  لوگ شامل ہیں، زاہد حامد بھی اسی ٹولے کا حصہ تھے، سراج الحق نے کہا کہ عوام میں حکومتی پالیسیوں کے خلاف سخت غم و غصہ پایا جاتا ہے، حکومت کو چاہئے کہ اپنا رویہ درست کرے۔