پاک بھارت ایٹمی جنگ نہیں ہوسکتی:وزیر اعظم،کرتار پور راہداری کی بنیاد رکھ دی


نارووال(  24نیوز  ) وزیر اعظم عمران خان نے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ جو خوشی مسلمانوں کو مدینہ منورہ پہنچ کر ہوتی ہے میں آج کرتار پور راہداری کھلنے پر سکھ بھائیوں کے چہروں پر محسوس کررہا ہوں،میں ہمیشہ ہار سے ڈرتا تھا،ہمیشہ سوچتا تھا کسی طریقے سے جیت جاﺅں اس وقت ایک اور کھلاڑی تھا جو صرف جیتنے کیلئے کھیلتا تھا،میں سیاست میں آیا تو یہاں بھی دو طرح کے لوگ ملے ایک وہ تھے جو کمانے کیلئے آئے اور دوسرے عوام کی خدمت کیلئے بڑی سوچ لیکر آیا۔بڑے کام ہمیشہ بے خوف اور عوام کی خدمت کرنیوالوں نے کیئے ہیں۔

عمران خان کی پنجابی شاعری ۔۔۔ویڈیو دیکھیں:

انہوں نے کہا ہے کہ دو ایٹمی طاقتوں میں جنگ نہیں ہوسکتی،سدھو کی باتیں سن کر خوشی ہوئی ہے،ماضی سے نکل کر آگے بڑھنا ہوگا،جب تک ماضی کی زنجیریں نہیں توڑیں گے تو آگے نہیں بڑھ سکتے،ہمیں اچھے ہمسائیوں کی طرح رہنا ہے،بھارت ایک قدم آگے بڑھائے ہم دو قدم بڑھائینگے،دونوں ممالک کی قیادتیں دوستی کیلئے آگے بڑھیں،یہ ہے نہ بھارت سے دوستی کیلئے سدھو کے وزیر اعظم بننے کا انتظار کرنا پڑے۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا خطاب ۔۔۔ویڈیو دیکھیں:

وزیر اعظم عمران خان نے کرتار پور راہداری کا سنگ بنیاد رکھ دیا،آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ ،سابق بھارتی کرکٹر نوجوت سنگھ سدھو،وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی و دیگر شخصیات بھی ہمراہ تھیں۔

وزیر اعظم عمران خان آج کرتار پور راہداری کا سنگ بنیاد رکھیں گے

وزیر اعظم عمران خان آج کرتار پور راہداری کھولنے کا سنگ بنیاد رکھیں گے،وزیر اعظم افتتاحی تقریب سے خطاب بھی کرینگے،سابق بھارتی کرکٹر نوجوت سنگھ سدھو خصوصی شرکت کرینگے،وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی،وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار سمیت اہم شخصیات بھی شریک ہونگی۔

بھارتی سکھ یاتریوں کے ارمان پورے ہونے کا وقت آن پہنچا،آج ان کیلئے اپنے روحانی پیشوا بابا گرونانک دیو جی کی گردوارہ صاحب میں آسانی سے پہنچنے کا راستہ کھلے گا، دنیا کے چپے چپے میں موجود سکھ کمیونٹی کے لوگ اپنے روحانی پیشوا بابا گرونانک دیو جی کے کرتار پور میں گزرے اٹھارہ سال کی یادگاروں کا اپنی آنکھوں سے نظارہ کرینگے۔

تقریب کی تیاریاں آخری مراحل میں پہنچ گئیں ہیں،کوریڈور کی تکمیل کیلئے نالہ بئیں اور دریائے راوی پردو پل بنائے جائیں گے، سڑک کی تعمیر کے لیے سروے مکمل کر لیا گیا،سڑک بھارتی سرحد میں قائم درشن پوائنٹ تک بنے گی جہاں بھارتی حکومت اپنے علاقے میں کوریڈور کا کام مکمل کرے گی۔ کرتار پور کوریڈور میں دریائے راوی پر 800 میٹر پل، پارکنگ ایریا اور سیلاب سے بچاو کیلئے فلڈ پروٹیکشن بند بھی تعمیر ہو گا۔

دوسرے فیز میں ہوٹل اورگوردوارہ کرتار صاحب کی توسیع کا عمل مکمل کیا جائے گا۔ پاکستان نے بھارتی سکھوں کی دیرینہ خواہش پر کرتار پور کوریڈور کی تعمیر کی تجویز دی تھی۔ تقریب میں شرکت کیلیے سفارتکاروں کو بھی مدعو کیا گیا ہے۔ بھارتی صحافی بھی شرکت کیلیے پاکستان پہنچ چکے ہیں۔ بھارت میں ہونے والی تقریب میں کسی غیر ملکی کو مدعو نہیں کیا گیا تھا, بھارت میں ہونے والی تقریب میں کریڈٹ لینے کیلیے سیاستدان لڑتے رہے, بھارت میں ہونے والی تقریب ہنگامہ آرائی کا شکار ہو گئی تھی, کرتار راہداری کھولنے کیلیے پاکستان کی تمام سیاسی جماعتیں اور ادارے یکساں موقف رکھتے ہیں-