عوام مہنگائی کے بم سے بچ گئے

عوام مہنگائی کے بم سے بچ گئے


 اسلام آباد( 24نیوز )  پی ٹی آْئی حکومت نے گیس کی قیمتوں میں اضافہ کا فیصلہ موخر دیا، اقتصادی رابطہ کمیٹی ن گردشی قرضوں کے کے حل کے لیے سفارشتا طلب کرلیں۔

 وزیر خزانہ کا کھاد کی قیمتوں میں اضافہ پر اظہار برہمی، کسانوں کو ہر ممکن سہولت فراہم کرنے کی ہدایت کردی۔وزیر خزانہ اسد عمر کی زیر صدارت ہونیوالے اقتصادی رابطہ کمیٹی کے پہلے اجلاس میں گیس کی قیمتوں میں اضافے کا فیصلہ موخر کردیا گیا۔ گیس کمپنیوں نے گھریلو، کمرشل، صنعتی صارفین کے علاوہ سیمینٹ اور کھاد فیکٹریوں سمیت پاور پالنٹ کے لیے گیس کی قیمت میں 200 روپے ایم ایم بی ٹی یو اضافہ کی سفارش کی تھی جب کہ سی این جی اور تندور مالکان کے لیے بھی گیس کی قیمتوں میں اضافے کی تجویز دی گئی تھی۔

اقتصادی رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں پاور سیکٹر کے گردشی قرضوں کے معاملے پر بریفنگ دی گئی۔ ای سی سی کو بتایا گیا کہ پاور سیکٹر کے گردشی قرضے ایک ہزار ایک سو چھیاسی ارب روپے سے بڑھ چکے ہیں۔ پاور ڈیوژن کے ذمہ 596 ارب روپے جب کہ پاور ہولڈنگ کمپنی کے ذمہ 582 ارب روپے ہیں۔ اقتصادی رابطہ کمیٹی نے سرکلر ڈیبٹ کے حل کے لیے وزارت سے سفارشات طلب کرلی ہیں۔

ای سی سی اجلاس میں وزیر خزانہ اسد عمر نے ملک بھر میں کھاد کی قیمتوں میں ناجائز اضافہ پر اظہار برہمی کرتے ہوئے ملوث عناصر کے خلاف کارروائی کی ہدایت کردی۔ ای سی سی کو بتایا گیا کہ آئندہ ربیع سیزن کے لیے 6 لاکھ ٹن کھاد کی ضرورت ہے۔ کمیٹی نے کھاد کی درآمد سے متعلق فیصلہ آئندہ اجلاس تک موخر کردیا۔ اقتصادی رابطہ کمیٹی نے پی ایس او کو 60 ارب روپے کا بیل آوٹ پیکیج دینے سے متعلق بھی فیصلہ موخر کردیا۔

شازیہ بشیر

   Shazia Bashir   Edito