مشرق وسطیٰ میں بالا دستی کیلئے امریکہ نے اسرائیل کو ہتھیار دیدئیے

مشرق وسطیٰ میں بالا دستی کیلئے امریکہ نے اسرائیل کو ہتھیار دیدئیے


واشنگٹن( 24نیوز ) امریکا نے اسرائیل کو سالانہ ساڑھے چار ارب ڈالر کی امداد فراہم کر دی ۔

امریکا کی جانب سے اسرائیل کیلئے مالی، مادی، معنوی اور فوجی امداد کوئی انوکھی بات نہیں۔ گذشتہ سات عشروں کے دوران امریکا کی ہر حکومت نے صہیونی ریاست کی اقتصادی اور عسکری شعبوں میں امداد میں بڑھ چڑھ کرحصہ لیا،سنہ 1948 کے بعد سے 2017 تک امریکا مجموعی طورپر صہیونی ریات کو 1 کھرب 30 ارب ڈالر کی امداد فراہم کی جب کہ بعض دوسرے اعدادو شمار کے مطابق یہ امریکا کی اسرائیل کے لیے امداد 2 کھرب 70 ارب ڈالر بتائی جاتی ہے۔

اسرائیل کو سب سے زیادہ مالی اور عسکری امداد دینے کے پیچھے امریکا کی یہودی لابی کا ہاتھ ہے، تاہم اس کے ساتھ ساتھ امریکی حکومتیں بھی مشرق وسطیٰ میں اسرائیل کی اقتصادی اور عسکری بالادستی کے لیے کوشاں رہی ہیں۔

امریکی کانگریس کے ارکان نے صحافیوں کو بتایا کہ امریکا اسرائیل کو اوسطا چار ارب پچاس کروڑ ڈالر کی سالانہ امداد فراہم کر رہا ہے، اسلحہ سازی کی صنعت کے اعتبار سے اسرائیل ترقی یافتہ ملکوں کی صف میںشامل ہے۔ سنہ 2001 سے 2008 تک دنیا بھر میں اسلحہ کی سپلائی میں ساتواں بڑا ملک قرار دیا گیا تھا۔ سنہ 2015 میں اسرائیل نے 9 ارب 90 کروڑ ڈالر کا اسلحہ فروخت کیا۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer