راؤ انوار کے ائیر پورٹ سے فرار ہونےسے متعلق نئے انکشافات


اسلام آباد(24نیوز) راؤ انوار سے متعلق سول ایوی ایشن اور ائیر پورٹ انتظامیہ کا کردار بھی مشکوک نظر آنے لگا۔ 24 نیوز کو راو انوار کی حاصل ہونے والی نئی تصویر نے سب کچھ عیاں کردیا۔ راو انور کو تلاش کرنے کےلیے کراچی پولیس کی ٹیم بھی اسلام آباد پہنچ گئی۔

 راؤانوار کی بے نظیر ائیر کے راول لاونج سے سامنے آنے والی تصویر میں واضح ہے کہ سابق ایس ایس پی بڑے اطمینان کے ساتھ اپنا سوٹ کیس ہینڈ کیری لئے راول لاونج سے گزرتے ہیں اور سامنے کاونٹر پر بیٹھا سول ایوی ایشن کا ڈیوٹی افسر حسرت بھری نگاہوں سے یہ نظارہ دیکھ رہا ہے۔ یہ اہلکار راؤ انوار کے لئے خصوصی طور پر دوسرے اہلکار کو ہٹا کر تعینات کیا گیا تھا ۔

ایک سرکاری افسر تو براہ راست راول لاونج سے داخلے کا مجاز ہی نہیں ہوتا اور یہ استحقاق تو صرف عوامی نمائندوں کو حاصل ہے جس میں وزرا، اراکان قومی و صوبائی اسمبلی اور سینٹرز شامل ہیں۔ دیگر کو پہلے ائیر پورٹ انتظامیہ اور سول ایوی ایشن سے تحریری اجازت لینا پڑتی ہے اور پھر انہیں لاونج کی انٹری پر باقاعدہ چیک کیا جاتا ہے، لیکن سابق ڈبنگ ایس ایس پی کے ساتھ ایسا کچھ نہیں ہوا، وہ گھر سے سیدھے ائیر پورٹ داخل ہوئے اور پھر بڑے دھڑلے سے وی وی آئی پی راستہ استعمال کرتے ہوئے اندر داخل ہوگئے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ سول ایوی ایشن کے بعض افسر بھی اس تمام عمل میں معاونت کار کے طور پر سامنے آرہے ہیں، جبکہ معاملے کی اعلی سطح پر تحقیقات بھی جاری ہیں۔ جلد راؤ انوار کے سہولت کار منظر عام پر آئیں گے۔

دوسری جانب ایس ایس پی ذوالفقار مہر بھی کراچی پولیس ٹیم کے ہمراہ اسلام آباد پہنچ گے ہیں۔ ایس ایس پی ذوالفقار مہر احساس ادارے کے ساتھ ملکر راؤانوار کو تلاش کریںگے۔