خاتون ہراسگی کیس،پروفیسر سحر انصاری کو قصور وار قرار دے دیا گیا


کراچی(24نیوز)جامعہ کراچی کے پروفیسر سحر انصاری پر خاتون کو جنسی طور پر ہراساں کرنے کی افسوسناک خبر، تحقیقاتی کمیٹی نے پروفسیر ڈاکٹر سحر انصاری کو قصور وار قرار دے دیا۔
تفصیلات کے مطابق ٹوینٹی فور نیوز نے تحقیقاتی رپورٹ کی کاپی حاصل کرلی، پروفسیر سحر انصاری نے ان پر لگائے گئے الزامات کو مسترد کر دیا، کہتے ہیں الزام جھوٹا اور بے بنیاد ہے،واقعے کی تحقیقات کیلئے بنائی گئی کمیٹی نے بھی پروفیسر سحر انصاری کو قصوروار ٹھرا دیا، کمیٹی نے پروفسیر سحر کے انصاری کے پڑھانے اور یونیورسٹی میں داخلے پر تاحیات پابندی کی سفارش بھی کی ہے،تحقیقاتی کمیٹی نے خاتون ڈاکٹر نوین کے بیان کو بھی حقیقت پر مبنی قرار دے دیا۔
پروفیسر سحر انصار نے ان لگائے گئے الزام کو مکمل طور پر مسترد کر دیا، کہتے ہیں خاتون نے ذاتی مفاد کیلئے ان پر یہ گھناؤنا الزام عائد کیا، میرے خلاف محاذ آرائی ہورہی ہے۔
سماجی رہنما عالیہ برنی کا کہنا تھا کہ تعلیمی اداروں میں ایسے واقعات افسوناک ہیں، اگر پروفیسر سحر انصاری پر لگایا گیا الزام درست ثابت ہوتا ہے تو یہ بہت دکھ کی بات ہوگی،آج کے دور میں تعلیمی اداروں میں درس و تدریس کی سرگرمیاں کم اور غیر نصابی لوازمات میں زیادہ شامل ہوچکے ہیں، جس سے پاکستان میں معیار تعلیم گرتا چلا جارہا ہے۔