قومی اسمبلی کے ایسے حلقے جہاں جیت کا مارجن بہت کم

قومی اسمبلی کے ایسے حلقے جہاں جیت کا مارجن بہت کم


اسلام آباد(24نیوز) قومی اسمبلی کےگیارہ حلقے ایسے ہیں جس میں جیتنے اور ہارنےوالےامیدوارں کےووٹوں کا فرق ڈیڑھ ہزار سے کم ہے۔ دوبارہ گنتی کرانے پران حلقوں میں جیتنے والے ہار اور ہارنے والےجیت بھی سکتے ہیں۔

خبردار, ہوشیار ,  کم مارجن سےجیتنےوالےجیت کاجشن ذرا احتیاط سے منائیں کیونکہ دوبارہ گنتی ہونے پر وہ جیتی ہوئی بازی ہار بھی سکتے ہیں ۔ قومی اسمبلی کے حلقوں کی بات کریں تواین اے 10 شانگلہ سے ن لیگ کے عباداللہ خان 33804  ووٹ لے کر کامیاب ہوئے ان کے مخالف اے این پی کے سدید الرحمان کو 32780 ووٹ ملے اس طرح دونوں کے درمیان 1024 ووٹوں کا فرق ہے۔

این اے 21 مردان 2 سے اے این پی کے امیر حیدر خان ہوتی کو 78911 ووٹ ملے جبکہ تحریک انصاف کےمحمد عاطف 78874 ووٹ کے ساتھ دوسرے نمبر پر رہے۔ووٹوں کا فرق 37 رہا۔ این اے73 سیالکوٹ تھری میں خواجہ آصف کو 116957 جبکہ عثمان ڈار کو 115464 ووٹ پڑے۔ فرق 1493ووٹ رہا۔ 
این اے 89 سوگودھا 2 سے ن لیگ کے محسن نواز رانجھا 114245 ووٹ لے کرکامیاب ہوئے ان کے قریب ترین پی ٹی آئی کے اسامہ احمد میلہ 113422 ووٹ لے سکے۔ ان کا فرق 823 ووٹ رہا۔ این اے 91 سرگودھا 4 ن لیگ کے ذوالفقار احمد بھٹی 110525 ووٹ لے کر کامیا ب ہوئے، پی ٹی آئی کے عامر سلطان چیمہ 110246ووٹ لے سکے۔ ان کا فرق  صرف 279 رہا۔

این اے 131 لاہور 9 سے عمران خان 84313 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے۔ ان کے مخالف خواجہ سعد رفیق کو 83633ووٹ پڑے۔  فرق 680 رہا. این اے108 فیصل آباد 8 سے پی ٹی آئی کے فرخ حبیب 112740 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے جبکہ عابد شیر علی 111529ووٹ لے سکے۔ این اے 140 قصور 4 سے پی ٹی آئی کے کامیا ب امیدوار سردار طالب حسن نکئی نے 124621 ووٹ حاصل کئے جبکہ ن لیگ کے رانا حیات خان 124385ووٹ لے سکے۔ ان کا فرق 236 رہا۔
این اے 215 سانگھڑ سے پیپلز پارٹی کے نوید ڈیرو کو 77812 ووٹ ملے جبکہ یہاں سے جی ڈی اے کے امیدوار حاجی خدا بخش 77227 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔ فرق 585 رہا۔ این اے 230 بدین سے ڈاکٹر فہمیدہ مرز 96875 ووٹ لے کر پہلے نمبر پر آئیں جبکہ پیپلز پارٹی کے حاجی رسول بخش 96015 ووٹ لے سکے۔ ان کا  فرق 860 رہا۔
این اے 249 کراچی ویسٹ ٹو سے پاکستان تحریک انصاف کے فیصل واوڈا 35244 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے ان کے مدمقابل ن لیگ کے صدر شہازشریف کو 34626 ووٹ مل سکے۔اس طرح دونوں کے درمیان صرف 618ووٹوں کا فرق ہے۔

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔