پاکستان کی محبت اور ملالہ کے آنسو


اسلام آباد (24 نیوز) نوبل انعام یافتہ ملالہ یوسف زئی ساڑھے پانچ سال بعد پاکستان پہنچ گئیں۔ قاتلانہ حملے، علاج کے بعد ملالہ پہلی بار پاکستان آ ئیں۔ ملالہ نے نجی پرواز سے آج رات اسلام آباد ایئرپورٹ پر لینڈ کیا۔

 24 نیوز کے مطابق نوبل انعام یافتہ ملالہ یوسف زئی آج پاکستان آ رہی ہیں۔ ملالہ نجی پرواز سے آج رات 1:25 منٹ پر اسلام آباد ایئرپورٹ پہنچیں۔

قاتلانہ حملے اور علاج کے بعد ملالہ پہلی بار پاکستان آئیں۔ ان کی آمد کو خفیہ رکھا گیا ہے۔ پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی جانب سے ملالہ کو باکس سکیورٹی فراہم کی جائے گی۔

علاوہ ازیں ملالہ کے والد اور خاندان کے دیگر افراد بھی ان کے ہمراہ ہیں۔ ملالہ یوسف زئی پاکستان میں اہم شخصیات سے ملاقات کریں گی۔

واپس پہنچ گئیں-
ذرائع کے مطابق ملالہ اس دوران اہم شخصیات سے ملاقاتیں کریں گی جب کہ سیکیورٹی وجوہات کی بناء پر وہ اسلام آباد میں ہی قیام کریں گی۔

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سے ملاقات کے لیے ملالہ یوسفزئی وزیراعظم ہاؤس پہنچیں جہاں انہیں سخت سیکیورٹی میں لایا گیا۔وزیراعظم اور ملالہ یوسفزئی کی ملاقات میں وزیر مملکت مریم اورنگزیب، انوشہ رحمان اور ماروی میمن بھی موجود ہیں۔

 

وزیر اعظم ہاﺅس میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ملالہ یوسفزئی اشکبار ہوگئیں،انہوں نے کہا ہے کہ مجھے یقین نہیں آرہا ہے میں پاکستان میں ہوں-

ملالہ یوسفزئی نے کہا کہ ابھی 20 سال کی ہوں، زندگی میں بہت کچھ دیکھا، اگر میں چاہتی تو کبھی بھی اپنے ملک کو نہیں چھوڑتی، ہمیشہ سے خواب تھا پاکستان جاؤں، وہاں بنا کسی خوف کے گلیوں میں گھوموں اور لوگوں سے ملوں، اپنے پرانے گھر جاؤں، جیسا پہلے تھا سب ویسا ہی ہو۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کا مستقبل اس کے لوگ ہیں، ہمیں بچوں کی تعلیم میں سرمایہ کاری کرنی چاہیے۔

اس موقع پر وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے بھی تقریب سے خطاب کیا  جس میں ان کا کہنا تھا کہ دنیا نے آپ کو عزت دی، پاکستان بھی آپ کو عزت دے گا، یہ آپ کا گھر ہے، جب آنا چاہیں آئیں، اب آپ عام عام شہری نہیں، آپ کی سیکیورٹی ہم پر لازم ہے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ جب آپ گئیں تو پاکستان میں دہشت گردی عروج پر تھی، ہم نے بہت مشکل جنگ لڑی جس کا شکار آپ خود ہوئیں، ہماری فوج، سول آرمڈ فورسز کے جوان اور شہریوں کی قربانیوں سے ملک میں امن ہے، ہم آج بھی دہشت گردی کے خلاف جنگ لڑرہے ہیں اور یہ جنگ لڑتے رہیں گے۔

شاہد خاقان عباسی نے کہاکہ ہمارے لوگ جانوں کا نذرانہ دے کر دنیا کو امن دے رہے ہیں، چاہتا ہوں آپ ہمارا پیغام دنیا کو پہنچائیں آپ دنیا کی اور پاکستان کی نمائندگی کرتی ہیں، آپ کے نوجوانوں اور بچیوں کی جو نمائندگی کی ہے وہ ہم سب کے لیے مشعل راہ ہے، میری کوشش ہے دعا ہے کہ اللہ آپ کو کامیاب کرے۔

وزیراعظم نے تقریر کے آخر میں ’ویلکم ہوم ملالہ‘ کہا۔