دھرنا 5واں روز،صراط مستقیم رانا ثناءاللہ کے استفے کیلئے ڈٹ گئی


لاہور (24نیوز) وفاقی وزیر قانون کے استعفے کے بعد تحریک لبیک نے فیض آباد دھرنا ختم کر دیا، لیکن لاہور کے چیئرنگ کراس پر دھرنا ابھی جاری ہے، مظاہرین صوبائی وزیر قانون رانا ثنا اللہ کےاستعفے پر ڈٹے ہیں، مظاہرین کا کہنا ہے کہ وہ استعفیٰ لئے بغیر جانے والے نہیں ہیں، احتجاج سے عام شہری کی پریشانی میں اضافہ ہوگیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ن لیگ کی حکومت مسائل کا شکار ہے، ایک طرف نیب ریفرنسز میں آئے روز پیشیاں، تو دوسری طرف تحریک لبیک کے دھرنے,وفاقی وزیر قانون زاہد حامد کے استعفے اور حکومت سے معاہدے کے بعد ملک بھر میں تحریک لبیک نے احتجاج ختم ہوگیا، لیکن لاہور کے چیئرنگ کراس پر تحریک کے کارکن وزیر قانون رانا ثنا اللہ کی برطرفی کے مطالبے پر ڈٹ گئے۔

لاہور کی اہم شاہراہ مال روڈ اکثر احتجاج اور مظاہروں کی زد میں رہتی ہے، جس سے مال روڈ پر تجارتی سرگرمیاں تو متاثر ہوتی ہی ہیں، شہر میں ٹریفک کا نظام بھی تیس نیس ہوجاتا ہے، فیصل چوک میں تحریک لبیک کے دھرنے کو آج پانچ دن ہوگئے، اطراف کی سڑکوں پر ٹریفک کا دباؤ، بڑھنے سے لوگ مسائل کا شکار ہیں، بچوں کو اسکول چھوڑنا، دفتر جانا محال ہوگیا ہے۔

صورتحال سے لگ اب ایسا رہا ہےکہ ہو نہ ہو لاہور میں تحریک لبیک کا دھرنا ن لیگ کی صوبائی حکومت کو پسپائی پر مجبور کر دے گا، تجزیہ کاروں کا کہنا ہےکہ حکمران جماعت کے رہنما خود اپنے پیروں کلہاڑی مار رہے ہیں۔