منی لانڈرنگ کیخلاف کاروئیاں،ڈیجیٹل ورچوئل کرنیسوں کی قدر میں ریکارڈ اضافہ


نیویارک(24نیوز)  منی لانڈرنگ اور آف شور کمپنیوں کے خلاف کاروائیوں نے ڈیجیٹل ورچوئل کرنسیوں کی قدر میں ریکارڈ اضافہ کر دیا، سب سے زیادہ استعمال ہونے والی خفیہ کرنسی بٹ کوائن کے ایک یونٹ کی قیمت 10 ہزار ڈالر سے بھی تجاوز کر گئی۔

تفصیلات کے مطابق سات سال قبل ایک بٹ کوائن 6 سینٹ میں مل جاتا تھا جبکہ 2017 کے آغاز پر اس کی قیمت ایک ہزار ڈالر سے بھی کم تھی، آن لائن خرید و فروخت اورسروسز فراہم کرنے والی ایک لاکھ سے زیادہ کمپنیاں بٹکوائن کو کرنسی کے طور پر تسلیم کر رہی ہیں، تاہم اس کی قیمت میں تیزی کے ساتھ اضافہ اسٹاک اور دوسری کرنسیوں کی طرح آن لائن ٹریڈنگ شروع ہونے کے بعد دیکھا گیا،آن لائن پاکستانی روپے میں بھی بٹ کوائن کی خرید و فروخت جاری ہے، ایک بٹ کوئن کی قیمت ساڑھے دس لاکھ روپے سے تجاوز کر چکی ہے۔

رپورٹ کے مطابق بٹ کوائن میں 61 فیصد ٹریڈنگ جاپانی ین میں ہو رہی ہے، جبکہ ڈالر میں ٹریڈنگ کا حجم 20 فیصد، اور شمالی کوریا کی کرنسی میں ٹریڈنگ کا حجم 11 فیصد ہے۔

اقتصادی ماہرین کا کہنا ہے کہ ڈیجٹل خفیہ کرنسی منی لانڈرنگ کے لیے استعمال ہو رہی ہے، اگر حکومتی اداروں نے کارروائی کی تو اس کی مالیت میں دوبارہ کمی آ سکتی ہے۔