استعفیٰ دیا نہ ہی دوسری پارٹی میں شمولیت اختیار کی:ضیا اللہ آفریدی

استعفیٰ دیا نہ ہی دوسری پارٹی میں شمولیت اختیار کی:ضیا اللہ آفریدی


اسلام آباد(24 نیوز)الیکشن کمیشن میں صوبائی رکن اسمبلی ضیاء اللہ آفریدی کے خلاف عمران خان کے ریفرنس پر سماعت ، ضیاء اللہ آفریدی کہتے ہیں انہوں نے استعفٰی دیا اورنہ ہی دوسری پارٹی میں شمولیت اختیار کی۔

تفصیلات کے مطابق  چیف الیکشن کمیشنرجسٹس سرداررضا کی سربراہی میں پانچ رکنی کمیشن نے رکن صوبائی اسمبلی ضیاء اللہ آفریدی کے خلاف دائر تحریک انصاف کے ریفرنس کی سماعت کی ۔

 وکیل پی ٹی آئی نے کہا کہ ضیاءاللہ آفریدی کو کرپشن چارجز پر وزارت سے ہٹایا گیا ، ان کی پیپلزپارٹی میں شمولیت کی خبریں اخبارات اور پارٹی ویب سائٹ کی زینت بنی ۔

ضیاء اللہ آفریدی نے پیپلزپارٹی میں شمولیت اختیار کر کے آئین کے آرٹیکل تریسٹھ اے کی خلاف ورزی ہے ، چیف الیکشن کمشنر کے استفسار کرنے پر وکیل تحریک انصاف نے بتایا کہ منتخب رکن قوانین کی خلاف ورزی نہ کرنے تک پارلیمانی پارٹی کا حصہ رہ سکتا ہے۔

ضیااللہ آفریدی کے وکیل لطیف کھوسہ نے تحریک انصاف کی جانب سےجمع کرائے گئے اضافی دستاویزات کا جائزہ لینے پر دلائل دینے کے لیے مزید وقت مانگ لیا۔

الیکشن کمیشن نے سماعت گیارہ دسمبر تک ملتوی کر دی ۔میڈیا سے گفتگو میں لطیف کھوسہ نے کہا کہ زاہد حامد اور انوشہ رحمان ایک دوسرے پر پھینک رہے ہیں، صرف وزیر قانون کو قربانی کا بکرا بنا دینا کافی نہیں۔ختم نبوت میں پوری کابینہ شامل ہے۔