افغانستان نے امن کی طرف قدم بڑھا دئیے

افغانستان نے امن کی طرف قدم بڑھا دئیے


کابل( 24نیوز )افغان طالبان کی طویل مزاحمت کے آگے افغان حکومت بے بس ہوگئے، پاکستان کی مان کر امن کی طرف قدم بڑھا دئیے۔

افغانستان کے صدر اشرف غنی نے طالبان کے ساتھ براہ راست امن مذاکرات کرنے کے لیے ایک بارہ رکنی کمیشن بنانے کا اعلان کیا ہے جس میں خواتین کو بھی نمائندگی دی گئی ہے۔جینیوا افغان صدر ڈاکٹر اشرف غنی نے طالبان سے مذاکرات کرنے کیلئے کمیشن کی تشکیل کا اعلان کیا ہے،اشرف غنی نے کہا کہ اس کمیشن کی سربراہی صدارتی چیف آف اسٹاف عبدالسلام رحیمی کریں گے اور اس میں مرد ارکان کے ساتھ ساتھ خواتین کو بھی نمائندگی دی گئی ہے۔

اس کمیشن کی تشکیل کے اعلان کے ساتھ ساتھ ڈاکٹر غنی نے ان بنیادی اصولوں کی بھی وضاحت کی جن کی بنیاد پر طالبان سے براہ راست مذاکرات کیے جائیں گے،۔ ان میں افغانستان کے آئین کی پاسداری اور ملک کے اندرونی معاملات سے غیر ملکی دہشت گرد تنظیموں اور گروہوں کو دور رکھنے کی بات بھی کی گئی ہے۔

یاد رہے افغانستان کے لیے امریکہ کے خصوصی سفیر زلمے خلیل زاد جنھوں نے دو ہفتے قبل قطر میں طالبان سے مذاکرات کیے تھے وہ کابل حکومت پر طالبان سے مذاکرات کر نے کے لیے اپنے نمائندے نامزد کرنے کے لیے دباو ڈال رہے تھے۔

دوسری جانب یورپی یونین کا افغانستان کی تعمیرنو کیلئے ساڑھے 53 کروڑ ڈالر دینے کا اعلان کردیا ہے،یورپی یونین نے افغانستان کی تعمیر نو میں معاونت کیلئے ساڑھے 53 کروڑ ڈالر امداد فراہم کرنے کا اعلان کردیا،یورپین کمشنرکا کہنا ہے کہ یورپی یونین ا فغان حکومت اور عوام کے شانہ بشانہ ہے،کمیشن کی جانب سے جاری بیان کے مطابق جنیوا میں کانفرنس کے دوران افغانستان کی مالی امداد کے پیکج کے معاہدے پر یورپین کمشنر برائے بین الاقوامی تعاون و ترقی نیون ممیکا اور افغانستان کے وزیر خزانہ محمد ہمایوں قیومی نے دستخط کیے۔

واضح رہے افغانستان میں پاکستان کی امن کوششوں کے باعث یہ پیش رفت سامنے آئی ہے، پاکستان نے روس،چین،ترکی اور دیگر ممالک کو ثالثی اور امن عمل کیلئے کوششیں کرنے پر قائل کیا جس کے حال ہی میں روس میں مذاکرات بھی ہوچکے ہیں۔