لیگی رہنما سینیٹر پرویز رشید حکومت پر پھٹ پڑے،عمران خان پر تنقید

لیگی رہنما سینیٹر پرویز رشید حکومت پر پھٹ پڑے،عمران خان پر تنقید


لاہور(24 نیوز)ن لیگی رہنما سینیٹر پرویز رشید کی ایف آئی اے لاہور میں پیشی ، جج ویڈیو اسکینڈل کے حوالے سے پوچھ گچھ  کی گئی، لیگی رہنما کا کہنا ہے یہ لوگ سیاست میں ہمارا مقابلہ نہیں کر سکتے،ایف آئی اے کو استعمال کیا جا رہا ہے ، این آر او نہ دینے کی گردان کرنے والا اپنے ساتھیوں کو این آر او دے رہا ہے۔

جج ارشد ملک ویڈیو کیس کی تحقیقات کے سلسلے میں آج مسلم لیگ ن کے رہنما سینیٹر پرویز رشید ایف آئی اے کے سامنے پیش ہوئے جب کہ  عظمٰی بخاری غیر حاضر رہیں اور ان کے وکیل نے پیشی کے لیے نئی تاریخ کی درخواست دی۔

پیشی کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سینیٹر پرویز رشید نے کہا کہ ایف آئی اے حکام نے ایسے سوال پوچھے جن کا نہ سر تھا نہ پیر، ایف آئی اے حکام نے پوچھا کہ پریس کانفرنس میں کون کون تھا؟ جب کہ پریس کانفرنس میں کون کون تھا سب کو پتا ہے۔حکام نے پوچھا ویڈیو کس نے دی اور یہ بھی سب کو پتا ہے کہ ویڈیو کس نے دی ہے۔

سینیٹر پرویز رشید نے کہا کہ ایف آئی اے حکام نے دوبارہ مجھے طلب کرنے کے حوالے سے پوچھا جس پر میں نے جواب دیا ہے کہ جب بلائیں گے میں حاضر ہوں۔ حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ پی ٹی آئی حکومت نے ملک کا مذاق بنا دیا ہے، ایف آئی اے کی طلبی سے مہنگائی کم نہیں ہوگی اس لیے حکومت عوامی مسائل دور کرنے پر توجہ دے۔

وزیراعظم عمران خان کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے پرویز رشید کا کہنا تھا کہ وہ شخص جو کہتا تھا کہ این آر او نہیں دوں گا، اب اپنے دوستوں کو این آر او دے رہا ہے۔ اے این ایف اور نیب کے بعد ایف آئی اے کو بھی سیاسی انتقام کے لیے استعمال کیا جا رہا ہے مگر تینوں ادارے ناکام ہو گئے ہیں۔ اے این ایف حنیف عباسی اور رانا ثنا اللہ کے کیس میں ناکام ہوئی، کیا حکومتوں کا کام یہ ہے کہ اداروں کو ناکامی کے سرٹیفکیٹس دلوائے؟

 نواز شریف کے وطن واپسی کے سوال پر ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف کی طبیعت بہتر نہیں ہے انہیں دعاؤں کی ضرورت ہے، وہ جیسے ہی صحتیاب ہوں گے وطن واپسی میں ایک منٹ کی تاخیر نہیں کریں گے۔

x

Azhar Thiraj

Senior Content Writer