سعودی عرب میں اسلام کے ابتدائی دور کی مسجد کے آثار دریافت

سعودی عرب میں اسلام کے ابتدائی دور کی مسجد کے آثار دریافت


سعودی عرب (24نیوز) دین اسلام کی ابتدائی دور کی مسجد کے آثار دریافت ، دریافت کی گئی مسجد کا نام جواثا ہے، یہاں اسلامی تاریخ کا دوسرا جمعہ پڑھایا گیا تھا، حکومت نے سیاحوں اور زائرین کیلئے مسجد کی تعمیر نو اور تزین و آرائش کرا دی۔

تفصیلات کے مطابق سعودی عرب کے مشرقی کے علاقہ الاحساء سے ریت اور مٹی تلے دبی مسجد ’جواثا‘ دریافت کر لی گئی ہے۔ مختلف ادوار میں اس مسجد کی تعمیر نو اور مرمت کا کام ہوتا رہا۔ جامع مسجد جواثا 7 ہجری کو قبیلہ بنو عبد قیس نے تعمیر کی۔ اس مسجد کا شہرہ جب قرب وجوار میں پہنچا تو مسلمان دور دور سے اسے دیکھنے آنے لگے اور نماز جمعہ بھی ادا کی گئی۔ یہی وجہ ہے کہ یہ مسجد آج بھی سعودی عرب کی تاریخی سیاحتی اور ثقافتی پہچان ہے۔ مسجد جواثا کی تعمیر نو کرکے روشنی کا جدید انتظام کیا گیا اور اسے دیگر سہولیات سے آراستہ کیا گیا۔

واضح رہے کہ مسجد کی تعمیر اس کی پرانی مٹی کی بنیادوں پر ہی کی گئی ہے۔ جغرافیائی محل وقوع کے اعتبار سے یہ مسجد شمال مشرقی شہر الھفوف سے 17 کلو میٹر کی دوری پر واقع ہے۔ سعودی مؤرخ الشیخ عبدالحمان الملا کے مطابق مسجد جواثاء کا بیشتر حصہ 1210ھ میں ریت اور مٹی تلے دب گیا تھا۔ الاحساء کے نیشنل ٹورزم اتھارٹی کے ڈائریکٹر خالد الفریدہ نے بتایا کہ 1210ھ میں الشیخ احمد بن عمرآل ملا نے اس کی تعمیر نو کرائی۔