مولانا فضل الرحمان کی لاٹری لگنے والی ہے!

مولانا فضل الرحمان کی لاٹری لگنے والی ہے!


اسلام آباد( 24نیوز )جمعیت علمائے اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کی لاٹری لگ سکتی ہے، شکست کے باوجود ان کے ایوان میں پہنچنے کے امکانات ابھی باقی ہیں۔

ملک کی سیاسی تاریخ میں پہلی بار ہوا کہ مولانا فضل الرحمان ایوان تک نہ پہنچ سکے،لیکن ایوان میں داخل ہونے کے دو مواقع اب بھی ان کے پاس ہیں،الیکشن قوانین کے مطابق جن حلقوں میں خواتین کے ووٹوں کی تعداد دس فیصد سے کم رہی، ان حلقوں کے نتائج کالعدم قرار دئیے جائیں گے۔

ان حلقوں میں این اے 39 ڈیرہ اسماعیل خان،این اے 10 شانگلہ شامل ہیں، یہاں خواتین ووٹرز کی شرح 7.81 فیصد رہی،این اے 44 خیبرایجنسی میں خواتین کے ووٹوں کی شرح 9.49 فیصد رہی، اسی طرح این اے 48 سے خواتین کے ووٹوں کی شرح 8.19 فیصد رہی۔

 یہ بھی پڑھیں: عمران خان کا خواب ٹوٹ جائیگا؟

ان حلقوں میں خواتین کے ووٹوں کی شرح کم ہونے پر نتائج کالعدم قرار دئیے جاسکتے ہیں،ادھر این اے 35 بنوں سے عمران خان اگر نشست خالی کرتے ہیں تو یہاں بھی ضمنی الیکشن کرانا ہوں گے، اس صورت میں یہاں سے اکرم درانی کے بجائے مولانا فضل الرحمان ضمنی الیکشن لڑ یں گے، ضمنی الیکشن میں کامیابی کی صورت میں مولانا کیلئے ایوان میں جانے کی راہ ہموار ہوسکتی ہے۔