پی ٹی آئی کو جھٹکا دینے کیلئے عباسی کا جماعت اسلامی سے رابطہ

پی ٹی آئی کو جھٹکا دینے کیلئے عباسی کا جماعت اسلامی سے رابطہ


اسلام آباد( 24نیوز )عام انتخابات 2018 کے لیے امیدواروں کی حتمی فہرستیں آج ریٹرننگ افسران (آر اوز) اور ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افسران (ڈی آر اوز) کے دفاتر میں آویزاں کی جائینگے، گی اور انتخابی نشان بھی جاری ہوں گے،یاد رہے کہ انتخابی عمل کے لیے پہلے مرحلے میں امیدواروں نے کاغذات نامزدگی جمع کرائے جس کے بعد اسکروٹنی کا عمل مکمل ہوا، تیسرے مرحلے میں امیدواروں کے کاغذات نامزدگی کی منظوری اور یا مسترد کیے جانے کے خلاف اپیلوں کی سماعت ہوئی،الیکشن کمیشن اپنا کام کررہا ہے تو امیدوار اپنے کام میں مصروف ہیں،جوڑ توڑ کا سلسلہ شروع کردیا گیا ہے۔

قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 53 اسلام آباد کا انتخابی میدان سج گیا، شاہد خاقان عباسی اور عمران خان انتخابی میدان میں آمنے سامنے ہیں،اس حلقے میں ن لیگ کا امیدوار کی حمایت کیلئے جماعت اسلامی سے رابطے میں ہے جس کی بھرپور کوشش ہے کہ جماعت اسلامی اس کی حمایت کردے۔

میاں اسلم این اے 53 اور 54 سے ایم ایم اے کے متفقہ امیدوار ہیں،ذرائع کے مطابق شاہد خاقان عباسی نے میاں اسلم سے آج ٹیلی فونک رابطہ کرینگے۔

یہ بھی پڑھیں:   شاہد خاقان عباسی الیکشن لڑنے کیلئے اہل ہوگئے

خیال رہے ن لیگ این اے 54 سے انجم عقیل خان کو ٹکٹ جاری کر چکی،ذرائع کا کہنا ہے کہ سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی جماعت اسلامی سے سیٹ ایڈجسٹمنٹ کے خواہشمند ہیں،وہ این اے53پر میاں اسلم کی حمایت چاہتے ہیں اور ان کو اپنے حق میں دستبردار کرانے کی کوششیں جاری رکھے ہوئے ہیں،ذرائع کے مطابق میاں اسلم نے پہلی ملاقات میں این 53 میں ن لیگ کی حمایت اور این اے 54 میں اپنی حمایت پر رضا مندی ظاہر کی تھی، شاہد خاقان عباسی نے پیشکش کی ہے کہ ن لیگ اگر سیٹ جیتی تو ضمنی الیکشن میں میاں اسلم کی حمایت کرے گی،دونوں جماعتیں این اے 53 میں اکھٹی الیکشن لڑیں گی۔

یاد رہے میاں محمد اسلم جماعت اسلامی پاکستان کے نائب امیر ہیں اور 2002ءکے عام انتخابات میں ایم ایم اے کی طرف سے ایم این اے منتخب ہوچکے ہیں۔