وفاقی دارالحکومت میں لگنے والی 24گھنٹے بعد بھی قابو سے باہر


 اسلام آباد(24نیوز) مارگلہ کی پہاڑیوں میں آئے روز آگ لگنے کے واقعات، مارگلہ کے قدرتی حسن کو مانڈ پڑھنے کا خدشہ، مارگلہ کی پہاڑیوں پر دو مختلف مقامات پر لگی آگ پر 24 گھنٹے بعد بھی قابو نہیں پایاگیا، آگ نے محکمہ ماحولیات اور متعلقہ اداروں کو بھی پریشان کر دیا۔

گزشتہ روز اسلام آباد کی مارگلہ کی پہاڑیوں میں دو الگ مقامات پر لگنے والی آگ پھیلنے لگ گئی۔ آگ پر قابو پانے کے لیے سی ڈی اے محکمہ جنگلات اور فائربریگیڈ کی ریسکیو آپریشن جاری ہے۔ تیز ہوا اور دشوار گزار راستوں کے باعث آگ بجھانے میں مشکلات کا سامنا ہے۔ ڈپٹی ڈائریکٹر ماحولیات اختر رسول نے کہا کہ اپریل سے جولائی تک آگ لگنا معمول کی بات ہے لیکن وقت سے پہلے آگ کے واقعات تشویشناک ہیں اور کسی کی شرارت کا نتیجہ ہو سکتا ہے۔

خوبصورت اور دلکش پہاڑیوں پر آگ اور دھوئیں کے بادلوں سے شہری بھی غم زدہ ہوگئے۔ ہائکینگ کے شوقین شہریوں نے آگ کے واقعات کو محکمہ ماحولیات اور حکومت کی غفلت قرار دیا اور مطالبہ کیا کہ ماحول کی حفاظت کے ساتھ کوئی بہتر ریسکیو پلان بھی ترتیب دیا جائے۔

آگ لگنے کی دو بڑی وجوہات میں سگریٹ نوش سیاحوں کی لاپرواہی بتائی گئی جبکہ دوسری وجہ یہاں کے دیہاتی اور ٹمبر مافیا کا بتایا گیا جو درخت کاٹ کر آگ لگاتے ہیں تاکہ چوری ہونے والے درختوں کا سراغ نہ لگایا جا سکے۔ شہریوں نے مارگلہ کے حسن کو بچانے کے لئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کا بھی مطالبہ کیا ہے۔

مزید اس ویڈیو میں: