عرس مادھو لعل حسین کا آغاز ہوگیا

عرس مادھو لعل حسین کا آغاز ہوگیا


لاہور(24 نیوز) پنجابی زبان کے کلاسیکی شاعر اور صوفی بزرگ شاہ حسین کا عرس تیس مارچ کو شروع ہورہا ہے ۔ آپ کی شاعری میں تصوف کے مضامین اس قدر پر اثر ہیں کہ سننے والا متاثر ہوئے بغیر نہیں رہتا ۔

باغبانپورہ کے علاقے میں واقع شاہ حسین کے مزار کو زیادہ تر لوگ مادھو لال حسین کا مزار کہتے ہیں ،اصل میں مادھولال اور شاہ حسین دو الگ شخصیات ہیں، مادھو شاہ حسین کا وہ ہندو عقیدت مند ہے جو اپنے مرشد کے نام کا حصہ بن گیا۔ یہ زمانہ اکبر کا ہے جب شاہ حسین لاہور میں سرمست پھرتے اور شاعری کرتے تھے۔

آپ 1538کو لاہور میں ہی پیدا ہوئے، یہیں پرانے شہر میں رہ کر حصول علم میں مصروف رہے۔ شاعری شروع کی تو کافی کی صنف کو اپنایا بلکہ متعارف کروایا، آپکی شاعری میں عشق مجازی کے استعارے عام ملتے ہیں۔ شاعری اس قدر پر اثراور موسیقی سے بھری ہے کہ ہر بڑے گائک نے آپکی کافیاں گا کر شہرت سمیٹی ہے۔

شاہ حسین 1599کو اس جہاں فانی سے کوچ کر گئے مگر ان کی شاعری اور تعلیمات نے انہیں آج بھی زندہ رکھا ہوا ہے۔ 

Malik Sultan Awan

Content Writer