ایران پاکستان گیس منصوبہ عالمی پابندیوں کے باعث التوا کا شکار ہے: وزیر اعظم



اسلام آباد(24نیوز) وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے ملک سے گیس بحران کے خاتمہ کا دعویٰ کر دیا، کہتے ہیں ہمارے پاس اب چوائس ہوگی کہ بجلی گھر فرنس آئل پر چلائیں یا ایل این جی پر، پاک ایران گیس پائپ لائن منصوبہ عالمی پابندیوں کے باعث التوا کا شکار ہے۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب میں وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ پانچ سال میں گھریلو صارفین  کو دس لاکھ نئے گیس  کنکشن دیے،صنعتوں،پاور سیکٹر ،سی اين جی اور فرٹیلائزر سیکٹرز  کو بھی گیس کی فراہمی یقینی بنائی۔

یہ بھی پڑھیں: حکومت کا پڑولیم مصنوعات کی قیمتوں میں حیران کن اضافہ کرنیکا فیصلہ

شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ ملک میں خام تیل کی یومیہ پیداوار ايک لاکھ بیرل تجاوز کر چکی ،دوہزار سترہ میں گیس ڈویلپمنٹ سرچارج کی مد میں صوبوں کو تہتر ارب روپے ادا کئے۔ وزيراعظم کا کہنا تھا کہ جنوب میں گیس ٹرانسمیشن لائن تعمیر  کی گئی جبکہ شمال جنوب ٹرنسمیشن لائن کا بھی جلد آپریشنل ہوجائے گی۔

وزيراعظم بولے کہ ايل پی جی کوٹے میں بڑے پردہ نشینوں کے نام میں موجودہ حکومت نے کوٹہ سسٹم ختم کرکے بڈنگ شروع کی جہاں گیس نہیں تھی وہاں ايل پی جی ايئر مکس پلانٹ لگا رہے ہیں۔

وزیر اعظم نے کہا کہ ملک میں اب فرنس آئل کی درآمد سال ميں صرف چار ماہ ہوتی ہے ايل اين جی پر سستی بجلی پیدا کر رہے ہیں۔ 

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔