بنارس شہر میں دریائے گنگا کے کنارے پہلی بار خواتین ریسلنگ چیمپین شپ کا اہتمام


بنارس (24نیوز):بھارت میں خواتین ریسلرز نے ساڑھے چارسو سالہ پرانی روایت توڑ دی، پہلی بار بنارس شہر میں دریائے گنگا کے کنارے 35 خواتین نے ریسلنگ کا مظاہرہ کیا، سیکڑوں تماشائیوں نے جم کر ہونے والے مقابلے دیکھے۔

تفصیلات کے مطابق گریپلر فریڈم یادیو نے بدھ کو عاش گوٹ پر اکھڈا گوسوامی تالولڈاس کی طرف سے منظم کشتی چیمپئن شپ کے دوسرے دن بھی  کامیابی حاصل کر لی فریڈم یادیو نے تانیہ گپتا کو قریبی مقابلے میں شکست دی اور بناراس میں پہلی دفعہ کسی خاتون پہلوان کو  کیریاری یا بناراس کمار کے نام سے خطاب دیا گیا۔

فریڈم یادیو نے اپنی فتح کے بعد کہاکہ میں میدان میں مخالف کو شکست دینے کے لئے اپنے گروں کا استعمال کرتی ہوں. کشتی میں بہت زیادہ دہان کرنے کی ضرورت ہوتی ہے، یہاں تک کہ ایک چھوٹی سی غلطی آپ کو کھیل سے باہر نکال سکتی ہے۔ ریسلنگ کھلاڑی کا کہنا تھا کہ میدان میں داخل ہونے کے بعد میچ کے ختم ہونے تک ہم توجہ کا مرکز رہتے ہیں۔