حکومت نے آئی ایم ایف کی شرائط ماننا شروع کردیں

حکومت نے آئی ایم ایف کی شرائط ماننا شروع کردیں


کراچی ( 24 نیوز )   اسٹیٹ بینک نے اگلے دو ماہ کے لیے مانیٹری پالیسی کا اعلان کر دیا۔ ڈالرمہنگااور روپیہ سستا، آئی ایم ایف کی شرط نمبرایک پوری، شرح سودبھی سنگل فگرسےنکل گئی،آئی ایم ایف کی شرط نمبردوبھی پوری، پٹرول سستا مگراونٹ کےمنہ میں زیرہ،  آئی ایم ایف کی شرط نمبرتین بھی  پوری،  کاروباری لاگت بڑھنے سے مہنگائی کا نیا طوفان آئےگا۔

اسٹیٹ بینک   کے مطابق پاکستان کے جاری کھاتے کے خسارے میں بہتری کے کچھ ابتدائی آثار دکھائی دینے لگے ہیں تاہم بڑھتی ہوئی مہنگائی، بلند مالیاتی خسارے اور زرمبادلہ کے کم ذخائر کی وجہ سے پاکستان کی معیشت کو درپیش قلیل مدت دشواریاں ابھی برقرار ہیں، مہنگائی میں اضافے کی شرح 6 فیصد کے ہدف کے مقابلے میں 6.5 سے 7.5 فیصد کے درمیان پہنچنے کا امکان ہےجبکہ مجموعی پیداوار کی شرح نمو 4 فیصد کی سطح سے کچھ زیادہ رہے گی۔

مرکزی بینک کی جانب سے جاری بیان کے مطابق زری پالیسی کمیٹی کا یہ نقطہ نظر ہے کہ معیشت میں استحکام کے لیے کی مزید کوششیں درکار ہیں، اس لیے 3 دسمبر سے پالیسی ریٹ کو 150 بیسز پوائنٹ کے اضافے سے 10 فیصد کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، اسٹیٹ بینک نے اس سے قبل ستمبر اور جولائی میں شرح سود 100  بیسزپوائنٹ بڑھائی تھی۔

ماہرین کے مطابق آئی ایم ایف سے ممکنہ طور پر نیا قرض لینے کے پیش نظر شرح سود میں اضافہ کیا جا رہا ہے، شرح سود میں اضافے سے صنعتی سیکٹر براہ راست متاثر ہوگا، بینکوں سے مہنگا قرض ملنے کے باعث کاروباری لاگت مزید بڑھ جائے گئی جبکہ عوام کو بھی مہنگائی کا تحفہ ملے گا۔

Malik Sultan Awan

Content Writer