آئی جی اسلام آبادکو ہٹانےکے معاملے پرفواد چودھری ڈٹ گئے



اسلام آباد(24نیوز) وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری وزیراعظم عمران خان کے آئی جی اسلام آباد کو ہٹانے کے حق میں کھڑے ہو گئے،ان کا کہنا تھا کہ اگر وزیر اعظم آئی جی کو بھی نہیں ہٹا سکتے تو الیکشن کرانے کا کیا فائدہ؟

تفصیلات کے مطابق وفاقی  وزیراطلاعات  فواد چوہدری کا  میڈیا سے گفتگو کرتےہو ئے کہنا تھا کہاگر صرف بیوروکریٹس کے ذریعے ہی حکومت چلانی ہے تو پھر الیکشن نہ کراتے، ایک آئی جی  کیسے یہ کر سکتا ہے کہ وفاقی وزیر کا فون  آئے اور نہ سنے ، اگر وزیراعظم آئی جی کو بھی معطل نہیں کرسکتا تو پھر وزیراعظم منتخب کرنے اور الیکشن کرانے کا کیا فائدہ؟ بیورو کریٹس کے ذریعے ہی حکومت چلالیتے،ان کا کہنا تھا کہآئی جی وزیراعلیٰ اور وزیراعظم کو جواب دہ ہے اور وزیراعظم کے ایگزیکٹو اختیارات ہیں جنہیں وہ استعمال کریں گے۔

آئی جی، وزیراعلیٰ اور وزیراعظم کو جواب دہ ہے، فون نہ اٹھاکر ہیرو بننےکا بیانیہ پھیلایا جارہا ہے،لیکن اس سے ملک میں انارکی پھیل جائے گی، اعظم سواتی غلط ہیں یا درست مسئلہ یہ نہیں ہے، انہوں نے کہاکہ 5 سال کے دوران خیبرپختونخوا میں شکایات پر پولیس والوں کے تبادلے کیےگئے، وزیراعظم اور وزیراعلیٰ کے اختیارات ہیں جنہیں وہ استعمال کریں گے، ممکن نہیں کہ آئی جی، ڈی سی یا کوئی اور وزیراعظم اور دیگر کو جواب دہ نہ ہوں۔

 وزیراطلاعات کا کہنا تھا کہ سیاسی نگرانی ایسے نہیں ہو گی کہ کوئی سرکاری افسر یا اپوزیشن کے ارکان فون نہ اٹھائیں،وزیر مملکت برائے داخلہ شہریار آفریدی نے وزیراعظم سے شکایت کی تھی کہ اسلام آباد پولیس تعلیمی اداروں میں منشیات فروشی کے خلاف کارروائی نہیں کررہی اور آئی جی اسلام آباد اس سلسلے میں  تعاون نہیں کررہا اور نہ ہی فون اٹھاتا ہے، منشیات فروشی کے خلاف کو ئی کارروائی بھی نہیں ہورہی۔

 وزیر اطلاعات نے کہا کہ وزیراعظم اور وزیر اعلیٰ اپنے اختیارات استعمال کریں گے، سپریم کورٹ قابل احترام ادارہ ہے جہاں حکومت اپنا موقف پیش کرے گی، یہ ممکن نہیں کہ وزرا اور وزیراعظم کو آئی جی ، ڈی سی اور ایس پی گھاس نہ ڈالے، علاوہ ازیں فواد چوہدری نےکاکہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان کا جب بنی گالا میں گھر بنا تو اسلام آباد کی حدود میں نہیں آتا تھا، موڑا نور یونین کونسل کا حصہ تھا، انہوں نے گھر بنانے کی اجازت دی، 30 سال بعد سی ڈی اے نے گھر کو اپنی حدود میں شامل کیا، لیکن وہاں پرانے گھر پچھلے قانون کے تحت بنے ہوئے ہیں جو غیر قانونی نہیں ہیں،

وزیر اطلاعات کا مزید کہنا تھا کہ ملک  میں سرمایہ کاری کے حالات بہتر ہو رہے ہیں، 2 دن میں اسٹاک مارکیٹ میں1450پوائنٹ کا اضافہ ہو ا ہے، سرمایہ کاروں کا حکومتی پالیسیوں پر اعتماد بڑھ رہا ہے، وزیر اعظم عمران خان کا دورہ چین بہت اچھا رہا ان کے دورہ چین سے نئے باب کا اضافہ ہو گا،چین  عوام اور پاکستان کے دل ایک ساتھ دھڑکتے ہیں، پاکستان کے دیوالیہ ہو نے کا خطرہ ٹل چکا ہے۔