نواز شریف اور شہباز کا اے پی سی اجلاس میں شرکت نہ کرنیکا فیصلہ



اسلام آباد(24نیوز) سابق وزیراعظم نوازشریف اور اپوزیشن لیڈر شہبازشریف اے پی سی میں شریک نہیں ہوں گے۔ مسلم لیگ ن کا 5 رکنی وفد راجہ ظفر الحق کی قیادت میں اے پی سی میں شریک ہوگا، ن لیگ کےوفدمیں خواجہ آصف،احسن اقبال،خواجہ سعد رفیق اورایازصادق شامل ہو نگے.

سابق وزیراعظم نےکپتان کےاین آراوسےمتعلق بیان کومستردکردیا۔ قومی اسمبلی میں اپوزیشن چیمبر میں نواز شریف کی زیرِ صدارت مشاورتی اجلاس منعقد ہوا۔سابق وزیراعظم کاکہناتھا عمران خان ہمارےخلاف کچھ نہ ملنے پرسرپٹخ رہے ہیں اوردھمکی آمیزبیانات دےکراپنی خفت مٹارہے ہیں۔دوسری جانب شریف برادران نے مولانا فضل الرحمان کو اکیلا چھوڑ دیا۔اپوزیشن کی اے پی سی میں ن لیگ کاوفدشرکت کرےگا۔

اجلاس میں شہباز شریف نے آصف زرداری کیساتھ اپنی ملاقات پر نواز شریف اور پارٹی رہنماوں کو اعتماد میں لیا۔ نواز شریف نے اپوزیشن کو متحد رکھنے کی تلقین کی۔ نواز شریف نے کہا کہ پیپلز پارٹی سمیت تمام اپوزیشن جماعتوں کیساتھ ملکر قومی مسائل پر بات کی جائے۔

مسلم لیگ ن چیئرمین پی اےسی کےلیے شہبازشریف کےنام پربھی ڈٹی نظرآئی۔اجلاس میں پارٹی ارکان نےچیئرمین پی اےسی سےمتعلق حکومتی تجویزمستردکردی اورفیصلہ کیا کہ شہبازشریف کےعلاوہ کسی کوچیئرمین پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نامزدنہیں کیاجائےگا۔

سابق وزیراعظم نواز شریف کو دھاندلی سے متعلق پارلیمانی کمیٹی کے بارے میں بھِی آگاہ کیا گیا۔ نواز شریف نے کہا کہ تحریک انصا ف کا جعلی مینڈیٹ ہر صورت میں بے نقاب ہونا چاہیے۔

ذرائع کے مطابق اجلاس میں مسلم لیگ ن نے پارٹی کی تنظیم نو کا فیصلہ کیا جس کیلئے احسن اقبال کی زیر صدارت آرگنائزنگ کمیٹی تشکیل دیدی گئی،کمیٹی تمام خالی عہدے پر کرنے کے حوالے سے سفارشات مرتب کریگی۔ مسلم لیگ نون نے فی الحال قائمقام صدر نہ بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔