وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کا صبح سویرے ہی شہر قائد کا دورہ


کراچی (24 نیوز) سندھ حکومت نے نئے سال کے آمد پر سی ویو پر جانے کیلئے عائد پابندی کا فیصلہ واپس لے لیا۔ وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کہتے ہیں، کہ شہری سی ویو پرجاکر انجوائے ضرور کریں لیکن دوسروں کی خوشیوں کا بھی خیال رکھیں، کسی کو فائرنگ کرنے کی ہرگز اجازت نہیں دیں گے۔

 تفصیلات کے مطابق وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ صبح سویرے ہی شہر قائد کے دورے پر نکل پڑے۔ مراد علی شاہ نے شاہراہ فیصل طارق روڈ، صدر الیکٹرانک مارکیٹ صفورا، نارتھ ناظم آباد، مزار قائد، اور خالد بن ولید روڈ سمیت شہر کے مختلف علاقوں کا دورہ کیا۔ اور ترقیاتی منصوبوں، پانی کی فراہمی نکاسی آب صفائی کا بھی جائزہ لیا۔ مراد علی شاہ نے انتظامیہ کی غفلت پر کہیں برہمی کا اظہار کیا، تو کہیں سختی سے ہدایات بھی جاری کیں۔

 وزیر اعلیٰ سندھ  نے شہر کے دورے کے دورن میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا، کہ پورے شہر کراچی کو ترقی دلانے کا پلان ہے لیکن ایک دن میں یہ کام نہیں ہوسکتا، کراچی کو کراچی بناکر دکھاوں گا۔انہوں نے  نئے سال 2018 کے آمد کے موقع پر شہریوں کو سی ویو پر جانے کیلئے سندھ حکومت کی جانب سے عائد پابندی کا فیصلہ واپس لے لیا اور کہا کراچی کے شہری انجوائے ضرورکریں لیکن دوسروں کی خوشیوں کا بھی خیال رکھیں۔

مراد علی شاہ نے صوبے میں گنے کے کاشتکاروں کا ذمہ دار پنجاب اور وفاقی حکومت کو قرار دیتے ہوئے کہا، کہ پنجاب سے سندھ کی شوگر ملز کو سستے دام پر گنا فروخت کیا جارہا ہے۔ وفاقی حکومت نے جو سبسڈی دینے کا اعلان کیا تھا، اس پر عمل نہیں کیا جارہا ہے۔

وزیر اعلیٰ سندھ   نارتھ ایسٹ کراچی فلٹر پلانٹ پر سیکورٹی کیلئے پولیس اہلکار تعینات نہ ہونے پر برہم ہوگئے، ایم ڈی واٹر بورڈ کی بھی سرزنش کردی اور ہدایت کی، کہ فلٹر پلانٹ پر تین شفٹوں میں پانچ پانچ افراد تعینات کریں باقی غیر حاضر رہنے والے ملازمین کو ملازمت سے فارغ کیا جائے۔