کراچی:سپریم کورٹ کا رفاحی پلاٹوں پر قبضے کا نوٹس


کراچی (24نیوز) سپریم کورٹ کا رفاحی پلاٹوں پر قبضے کا نوٹس ،معاملہ عدالت میں جانے پر قبضہ مافیا کی نیندیں اڑگئیں،شہر میں 33 ہزار سے زائد غیرقانونی پلاٹز پرتعمیرات قائم ہیں۔

تفصیلات کے مطابق کراچی میں سپریم کورٹ کا رفاحی پلاٹوں پر قبضے کا نوٹس لے لیا گیا۔ بات عدالت تک گئی تو قبضہ مافیا کی نیندیں اڑ گئی۔ انتظامی اداروں کو بھی ہوش آہی گیا۔ کراچی ڈیولپمنٹ اتھارٹی نے 2 ماہ میں 15 ہزار سے زائد تعمیرات کو ڈھادیا۔ جن میں شادی ہالز،دکانیں، غیر قانونی گھر، فلیٹس، گودام، بھینسوں کے باڑےاور دیگر شامل ہیں۔       

ڈی جی کے ڈی اے سمیع صدیقی نے موقف اپنایا کہ سالوں کی خرابیوں کو دور کرنا اتنا آسان نہیں ہے۔ اداروں میں سے فقط صرف کے ڈی اے غیر قانونی زمینوں کے خلاف سرگرم رہی۔ جبکہ 40 فیصد سے زائد زمین کی مالک شہری حکومت شہر سے 30 سے زائد شادی ہالز مسمار کرنے میں کامیاب نظر آئی۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ میئر کراچی اینڈ کمپنی کو سیاسی دباو ہونے کے باعث آپریشن کو منطقی انجام تک پہنچانے میں دشواری کا سامنا ہے۔ دوسری جانب شہر میں اس وقت بھی 33 ہزار سے زائد غیر قانونی پلاٹز پر تعمیرات قائم ہیں۔