سندھ کابینہ کے اجلاس میں جہیز کی گونج,جہیز کے خاتمےکے لیے تجاویز پیش کردی گئی

سندھ کابینہ کے اجلاس میں جہیز کی گونج,جہیز کے خاتمےکے لیے تجاویز پیش کردی گئی


کراچی(24نیوز) سندھ کابینہ کے اجلاس میں جہیز کی گونج، جہیز کے خاتمےسے متعلق بل میں تجاویز پیش کردی گئیں، جہیز1 لاکھ روپے سے زیادہ نہیں ہونا چاہیئے،وزیرِاعلیٰ کا کہنا تھا کہ ایسا قانون بنانا چاہیئے کہ تجاویز لاگو ہوسکیں۔

تفصیلات کے مطابق سندھ کابینہ کا اہم اجلاس وزیرِ اعلی   سندھ کی زیرِ صدارت ہوا تو جہیز کے خاتمےسے متعلق بل میں تجاویز دی گئیں۔وزیرِ اعلیٰ سندھ کو آگاہی دی گئی کہ سندھ میں جہیز 50 ہزار اور مہندی کے گفٹس یا اخراجات 50 ہزار سے زیادہ نہیں ہونا چاہیئے۔ جہیز کسی دباؤ یا ہراساں کے ذریعے بھی حاسل نہیں کیا جاسکتا۔ دولہا یا اسکے اہل خانہ کسی بھی طرح جہیز کی مطالبہ نہیں کریں گے۔ رخصتی کے وقت دلہن اور دولہا کے اہل خانہ تمام جہیز باراتیوں کو دکھانے کے پابند ہونگے۔ان تمام پابندیوں کی خلاف وزری پر 6 ماہ سزا اور بھاری جرمانہ ہوگا۔ وزیرِ اعلیٰ سندھ نے کہا کہ یہ تجاویز ایسی ہیں جو فعال کرنا مشکل ہیں۔ ہمیں ایسا قانون بنانا چاہیئے کہ تجاویز لاگو ہوسکیں۔

دوسری جانب وزیرِ صنعت منظور وسان نے کہا کہ جہیز کے خلاف اس طرح کی سزا دینا قانوناً مناسب نہیں۔ وزیرِ اعلیٰ سندھ نے کہا کہ جہیز کا خاتمہ یا غیر ضروری مطالبات کو سوسائٹی میں شعور پیدا کرنے سے ہوسکتا ہے۔ایسا قانون بنائیں جس میں جہیز لینا برا لگے۔