ہسپتال میں کمپوٹرازپرچی کاونٹرمریضوں کے لیے درد سربن گیا

ہسپتال میں کمپوٹرازپرچی کاونٹرمریضوں کے لیے درد سربن گیا


  گوجرانوالہ ( 24نیوز )  ڈی ایچ کیو ہسپتال میں کمپوٹرازپرچی کاونٹرمریضوں کےلیے دردسربن گیا پرچی کے حصول کے دوران مبینہ طور ڈاکٹرز کی غفلت سےنومودبچےکی ہلاکت پراسپتال انتظامیہ نے انکوائری مکمل کر لی۔

تفصیلات کے مطابق گوجرانوالہ ڈی ایچ کیو اسپتال میں پرچی کاونٹر پر نومود بچہ کی ہلاکت پر ورثاء نے ڈاکٹرز کے خلاف کاروائی کے بارے ڈپٹی کمشنر کو دراخواست دے دی۔ ہسپتال کے ایم ایس کا کہنا ہے ایمر جنسی صورت حال میں پرچی کی ضرورت نہیں ہوتی۔ہلاک ہونے والے بچے کے ورثاء نے موقف دیا کہ ہمارے بچے کی حالت سریس تھی ہمیں بچے کی پرچی بنوانے کے لیے کاونٹر کی لائن میں کھڑا کر دیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں:کیا آپ جانتے ہیں؟  آپ گٹکا اور پان کی شکل میں زہر کھا رہے ہیں 

بچے کو بروقت ڈاکٹرز دیکھتے تو ہمارے بچے کی موت واقع نہیں ہوسکتی تھی، ڈی ایچ کیو ہسپتال میں پرچی کاونٹر پر مبینہ طور پر ڈاکٹرز کی غفلت سے نومولود بچے کی ہلاکت پر انکوائریہ مکمل کرلی ۔بچہ ہسپتال پہنچا تو ہلاک ہوچکا تھا ڈی ایچ کیو اسپتال کے ایم ایس نے ڈپٹی کمشنر کو رپورٹ بجھوا دی۔ مریضوں کی استدعاء ہے کہ کمپوٹراز پرچی پر ہی مریض کا چیک اپ ہوتا اس کے لیے گھنٹوں لائن میں کھڑے ہونا پڑتا ہے۔