پیپلز پارٹی نے ہمیشہ جمہوریت، پارٹی پارلیمان کو مضبوط بنانے کیلئے جدوجہد کی ہے: بلاول


کراچی ( 24نیوز ) بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ مشکلات اور دھاندھلی کے باوجود پیپلز پارٹی نے 2013 کے مقابلے میں 2018 کے انتخابات میں بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے۔

  پیپلزپارٹی کی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس ہوا، بلاول بھٹو زرداری کہتے ہیں مشکلات اور دھاندھلی کے باوجود پیپلز پارٹی نے 2013 کے مقابلے میں 2018 کے انتخابات میں بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے۔پاکستان پیپلزپارٹی کے چئیرمین بلاول بھٹو زرداری کی صدارت میں پارلیمانی پارٹی کے پہلے اجلاس میں نومنتخب ارکان صوبائی و قومی اسمبلی کے اعزاز میں بلاول ہاؤس پر ظہرانا دیا گیا۔

نومنتخب ارکان سے خطاب میں بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ پیپلز پارٹی نے ہمیشہ جمہوریت اور پیپلزپارٹی پارلیمان کو مضبوط بنانے کے لیئے جدوجہد کی ہے اور اپنے نظریئے کو فروغ کے لیئے پارلیمان کا فورم استعمال کرے گی، مشکلات اور دھاندھلی کے باوجود پیپلز پارٹی نے 2013 کے مقابلے میں 2018ع کے انتخابات میں بھتر کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔

یہ بھی پڑھیں:الیکشن کمیشن نے چیف الیکشن کمشنر کے استعفے کا مطالبہ مسترد کر دیا 

کچھ پارٹیاں پارلیمان کا بائیکاٹ کرنے کی باتیں کر رہی تھیں، لیکن ہم نے انہیں ایسا نہ کرنے پر قائل کرلیا، یہ جمہوری سوچ کی کامیابی ہے۔ گو  کہ ہمیں انتخابی عمل پر تحفظات ہیں ان کا کہنا تھا کہ ہمیں سندھ میں مزید ڈلیور کرنے پر فوکس کرنا ہے گڈ گورننس اور بہتر کارکردگی ہماری نئی حکومت کا طرہ امتیاز ہوگا اور ہم اس عوام کو مایوس نہیں کریں گے۔ جس نے ہمیں ایوانوں میں بھیجا ہے جبکہ ہمیں عالمی و معاشی محاذ پر بہت بڑے چیلنجز کا سامنا ہے۔