عباسی نے نواز شریف کو شکست دے دی


اسلام آباد( 24نیوز )وفاقی آئینی مدت آج رات بارہ بجے ختم ہوجائے گی، اس دوران وفاقی کابینہ کے مجموعی طور پر 76 اجلاس ہوئے، نواز شریف نے اپنی وزارت عظمیٰ کے دور میں مجموعی طور کابینہ کے چھتیس اجلاس بلائے، ان کے مقابلے میں شاہد خاقان عباسی نے دس ماہ کے مختصر عرصے میں چالیس اجلاس بلائے۔
نواز شریف نے اپنی وزارت عظمیٰ کے پہلے 13 ماہ میں 14 اجلاس بلائے،دوسرے سال 7 اجلاس، تیسرے سال صرف 3 اجلاس بلائے گئے، نواز شریف نے ایک اجلاس کی صدارت لندن سے ویڈیو لنک پر بھی کی،چوتھے برس نواز شریف نے 12 اجلاس بلائے، اس کے بعد نااہل کردیے گئے۔
شاہد خاقان عباسی نے ہر ہفتے اجلاس بلانے کا فیصلہ کیا،صرف ایک یا دو اجلاس وزیر اعظم کے بیرون ملک ہونے پر موخر ہوئے، نواز شریف نے 4 سال میں 36، عباسی نے 10 ماہ میں 40 اجلاس بلائے، شاہد خاقان عباسی نے وزارت عظمیٰ کا عہد سنبھالتے ہی اعلان کیا تھا کہ وہ 45 دن میں 45 مہینوں کا کام کرکے جائیں گے۔ اگر ان کی کارکردگی کا موازنہ نواز شریف سے کیا جائے تو ان کی بات درست لگتی ہے۔

یہ خبر بھی پڑھیں: نگران وزیر اعلیٰ:شہباز ڈٹ گئے،کھوسہ کی معذرت
بیماری کے دنوں میں نواز شریف نے ایک اجلاس کی صدارت لندن سے ویڈیو لنک پر بھی قائم کی،اقتدار کے آخری سال میں نواز شریف نے کابینہ کے 12 اجلاس بلائے، جس کی وجہ سپریم کورٹ کا ایک فیصلہ تھا۔

اظہر تھراج

صحافی اور کالم نگار ہیں،مختلف اخبارات ،ٹی وی چینلز میں کام کا وسیع تجربہ رکھتے ہیں