دوسری بارجمہوریت کی جیت، حکومت کی آئینی مدت مکمل، اسمبلیاں تحلیل


اسلام آباد(24نیوز) پاکستان مسلم لیگ ن کے پانچ سالہ دور اقتدار کے بعد مدت مکمل ہو گئی۔ حکومت کی مدت ختم ہوئی جو مستحکم جمہوریت کی طرف ایک اور قدم ہے۔

متعلقہ خبر:مسلسل تیسری بار آئینی مدت پوری ہونے پر پنجاب اسمبلی تحلیل

24 نیو ز کے مطابق وزارت پارلیمانی امور نے قومی اسمبلی کے تحلیل ہونے کا نوٹیفکیشن بھی جاری کر دیا ہے۔آج سے نگران سیٹ اپ ملکی معاملات سنبھالے گا۔ نگران وزیراعظم کا فیصلہ تو ہوچکا لیکن نگران وزرائے اعلیٰ کا نام فائنل نہیں ہوا۔ معاملہ پارلیمانی کمیٹی میں جانے کا امکان ہے۔ جبکہ یہ تاریخ میں پہلی بار ہوا ہے کہ پاکستان میں تیسری بار اسمبلی نے مدت پوری کی ہے۔ دو بار جمہوری حکومتوں کے دور میں ایسا ہوا ہے۔

پڑھنا نہ بھولیں:الیکشن کمیشن نے عام انتخابات 2018ء کے شیڈول کا اعلان کر دیا 

 تفصیلات کے مطابق حکومت کی مدت آج ختم ہورہی ہے۔نگران وزیراعظم جسٹس  (ر) ناصر الملک آج اپنے عہدے کا حلف اٹھائیں گے لیکن نگران وزرائے اعلیٰ کا معاملہ تا حال حل طلب ہے۔پنجاب میں پی ٹی آئی نے پہلے ناصر سعید کھوسہ کے نام کا اعلان کیا پھر عجیب وغریب بہانے بنا کر نام واپس لے لیا۔ ن لیگ ناصر کھوسہ کے نام پرکھڑی ہوگئی لیکن ناصر کھوسہ نے ہی معذرت کرلی۔ 

یہ بھی پڑھیں:حکومتی کارکردگی پروزیراعظم کا قومی اسمبلی اجلاس میں آخری خطاب

 اس کے بعد پی ٹی آئی نےبڑے ہی سوچ بچار کے بعد نگران وزیراعلیٰ پنجاب کے لئے ناصردرانی اور ڈاکٹرحسن عسکری کا نام دیا لیکن ناصر درانی نے وقت سے پہلے ہی معذرت کرلی۔خیبرپختونخوا میں تحریک انصاف منظور آفریدی کا نام واپس لینے کے بعد اعجازقریشی اور حمایت اللہ کے نام دے دئے ہیں۔ سندھ اوربلوچستان کی صورتحال بھی کچھ مختلف نہیں، دونوں صوبوں میں حکومتیں اوراپوزیشنزوزیراعلیٰ کے لئے حتمی نام نہیں دے سکیں۔

لیگی وزرا کی کانفرنس دیکھنے کیلئے یہ ویڈیو بھی دیکھیں: