نئے چڑیا گھر کی خستہ حالی، جانور بیماریوں کا شکار

نئے چڑیا گھر کی خستہ حالی، جانور بیماریوں کا شکار


پشاور(24نیوز) نئے چڑیا گھر کو بنے ابھی زیادہ عرصہ نہیں ہوا۔ لوگوں کی تفریح کیلئے لائے گئے جانور کچھ بیمار تو کچھ مرنے لگے۔ چڑیا گھر کیلئے لایا گیا ایک ہرن مناسب دیکھ بھال نہ ہونے کی وجہ سے مر گیا۔  

تفصیلات کے مطابق پشاور میں 2 فروری کوعوام کیلئے کھولے جانیوالے خیبر پختونخوا کے واحد اور رقبے کے لحاظ سے پاکستان کے سب سے بڑے چڑیا گھر میں حکومت نے عوام کی تفریح کیلئے ایک ہزار سے زائد نایاب نسل کے جانوروں کو یہاں منتقل کیا۔

 جس میں آج فیلو ڈیر نسل کے ہرن کی موت واقع ہو گئی۔ چڑیا گھر انتظامیہ نے اسے چڑیا گھر کے ٹھیکیدار کی زمہ داری قرار دے دیاہے۔

آب و ہوا کی تبدیلی یا انتظامیہ کی غیر ذمہ داری کی وجہ سے پشاور کے چڑیا گھر میں 10 دن پہلے لائے جانیوالے 9 ہرنوں میں سے ایک ہرن بیماری کےسبب مر گیا جبکہ مرنیوالے ہرن کی ایک ٹانگ بھی ٹوٹی ہوئی تھی۔

 

چڑیا گھر انتظامیہ نے ہرن کی موت کی ذمہ داری تو کنٹریکٹر پر ڈال دی مگر چڑیا گھر میں موجود باقی 8 ہرن بھی بیماری میں مبتلا ہیں اگر ان جانوروں کی مناسب دیکھ بھال نہ کی گئی تو چڑیا گھر ویران ہو سکتا ہے۔