اپوزیشن نے وزیر اعظم کو آڑے ہاتھوں لے لیا


اسلام آباد( 24نیوز )قومی اسمبلی کے اجلاس کے دوران اپوزیشن نے حکومت کو آڑے ہاتھوں لیا،ملک میں جاری احتجاج پر حکومت سے باز پرس کی گئی،وزیر اعظم کی ایوان میں عدم موجودگی پر بھی گرما گرمی دیکھنے میں آئی۔
ہم جمہوریت کے ساتھ ہیں:بلاول
قومی اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ ہم جمہوریت کے ساتھ ہیں،چیلنجز سے نمٹنے کیلئے حکومت کے ساتھ ہیں،حکومت بتائے ججوں کی حفاظت کیلئے کیا اقدامات کئے،چاہتے ہیں عمران خان بطور وزیر اعظم اپنا کردار ادا کریں۔
بلاول بھٹو زرداری کی میڈیا سے گفتگو کے دوران صحافی نے سوال کیا کہ ایوان میں وزیراعظم کیلئے نعرہ لگایا کیا پالیسی میں تبدیلی تو نہیں؟ انہوں جواب میں کہا کہ پالیسی میں کوئی تبدیلی نہیں، میری بات کو غلط پک کیا گیا، بات کو غلط زاویے سے دیکھا جا رہا ہے،جب بھی ملکی مفاد کی بات آئی تو پیپلز پارٹی ہمیشہ سے آگے رہی، عمران خان کو آج ایوان میں ہونا چاہیے تھا۔

وزیر اعظم کے قوم سے خطاب کی مذمت کرتا ہوں:خورشید شاہ

پیپلز پارٹی کے رہنما خورشید شاہ نے کہا ہے کہ میں وزیر اعظم کے قوم سے خطاب کی مذمت کرتا ،یہ تقریر ایک وزیر اعظم کی نہیں تھی،دورہ چین سے پہلے وزیر اعظم کو یہاں آنا چاہئے تھا،ہم سب کو مل کر بیٹھنا ہوگا،حکومت کو بھی اس معاملے پر بولنا چاہئے،پہلے کہا گیا وزیر اعظم اجلاس میں آئینگے، کبوتر کی طرح آنکھیں بند کرنے سے کچھ حاصل نہیں ہوگا۔

کونسا مسلمان حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کی شان میں گستاخی برداشت کرےگا، اس نام پر مسلمان کٹ مرنے کو تیار ہیں,ہم حکومت کو ٹارگٹ نہیں بنانا چاہتے، لڑائی نہیں کرنا چاہتے، ہم چاہتے ہیں کہ جو ہو رہا ہے، اس پر بیٹھ کر بات کرنی چاہیے اور ملکی حالات پر حکومت کو تحمل کے ساتھ باتیں سننی چاہیے-

سپریم کورٹ کے فیصلے پر عملدرآمد حکومت کی ذمے داری ہے:شفقت محمود 

وفاقی وزیر شفقت محمود نے کہا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے پر عملدرآمد حکومت کی ذمے داری ہے لیکن ہمیں افسوس ہوا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے پر سیاست کھیلی گئی، خورشید شاہ نے اپنی تقریر میں ریاست کی رٹ چیلنج کرنے والوں کی مذمت نہیں کی، عمران خان نے حکومتی موقف بہادری کےساتھ 22 کروڑ عوام کے سامنے پیش کیا، انہوں نے صاف کہا کہ ریاستی رٹ کو چیلنج کرنا برداشتنہیں کریں گے۔ اپوزیشن کو بے جا تنقید کے بجائے قانون کی حکمرانی کیلیے اکٹھے ہونا چاہیے۔

میڈیا پر پابندی کیا جمہوریت ہے؟: خواجہ سعد رفیق

ن لیگ کے ایم این اے خواجہ سعد رفیق نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ میڈیا پر پابندی کیا جمہوریت ہے؟کل وزیر اعظم کا لب و لہجہ جارحانہ تھا،ہم ان حالات میں کوئی سیاسی فائدہ نہیں اٹھانا چاہتے،کل پی ٹی آئی والے لاک ڈاﺅن کررہے تھے آج کہتے ہیں احتجاج کرنا جمہوریت کے خلاف ہے،کل کون کہہ رہا تھا مار دو،جلا دو،ہم نے پہلے بھی جیلیں دیکھی ہیں،ہم صرف جمہوریت کیلئے چپ ہیں۔