علاج معالجہ، تعلیمی اخراجات کو ’مہنگائی‘ کی ہوا لگ گئی


اسلام آباد(24نیوز) عوام کومہنگائی سے چھٹکارا نہیں ملا۔ سبزیاں دالیں سستی ہوئیں توپھلوں اور دوسری اشیا کی قیمتیں بڑھنا شروع ہوگئیں۔ علاج معالجہ اور تعلیمی اخراجات میں بھی اضافہ ہوگیا۔

   پاکستان ادارہ شماریات کے مطابق مارچ میں مجموعی طور پرمہنگائی کی اوسط شرح 3.8 فیصد رہیں۔ سبزیاں 54 فیصد اور دالیں 22 فیصد تک سستی۔

خوراک کے سوا دوسری اشیا کی قیمتوں میں اضافے کی اوسط شرح 5.8 فیصد تک پہنچ گئیں۔ مارچ کے دوران چاول کی قیمت گزشتہ سال سے 13 فیصد رہے۔ انڈوں کی دس فیصد اور گوشت کی قیمت 8 فیصد زیادہ رہی۔

یہ بھی پڑھیں:انٹر بینک مارکیٹ میں روپے کی قدراور سٹاک مارکیٹ، ہفتہ بھر کے احوال
 
تازہ پھل 5 فیصد مہنگے فروخت ہوئے۔ جبکہ روز مرہ استعمال کی اشیا اور سروسز میں سےمٹی کا تیل 31 فیصد اور پیٹرول 13 فیصد مہنگا فروخت ہوا۔تعلیمی  اخراجات 18 فیصد، جرائد کی قیمت 12 فیصد، تعمیراتی اخراجات 10 فیصد اور ڈاکٹر کی فیس 8 فیصد زیادہ ہوگئی۔تاہم اس دوران سبزیوں کی قیمت میں 54 فیصد اور دالوں کی قیمت میں 22 فیصد تک کمی دیکھی گئی۔

رپورٹ کے مطابق مارچ کے دوران روزمرہ استعمال کی 50 بنیادی اشیا اورسروسز میں سے 45 کی قیمت میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔