امریکی صدر کے بیان پر پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس بلانا چاہئیے:خورشید شاہ

امریکی صدر کے بیان پر پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس بلانا چاہئیے:خورشید شاہ


اسلام آباد(24نیوز) اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ کا کہنا ہے کہ امریکی صدر کے بیان پرپارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس بلانا چاہئے،یہ کسی پارٹی یا فرد کا نہیں پاکستان کا مسئلہ ہے۔

تفصیلات کے مطابق اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ نے اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا پاکستان کے مسئلے پر ہمیں کوئی سیاست نہیں کرنی،پاکستان کے لئے تمام سیاست ایک طرف ہم متحد ہیں، شریف برادران کے خلاف اتنے کیسز کے بعد بھی این آر او ہواتو عدالتوں کو تالے لگا دینے چاہیں۔

 انہوں نے مزید کہا امریکی صدر کے بیان پر پارلیمنٹ مشترکہ اجلاس بلانا چاہیئے ، ٹرمپ کا رویہ انتہائی افسوسناک ہے۔پاکستان نے بہت بڑی قیمت ادا کی جس کا کوئی نعم البدل نہیں۔،79میں روس جنگ میں جھونکا گیا۔ امریکیوں کے آگے جھک کر ہر سہولت فراہم کی۔،تب سے آج تک پاکستان امریکہ کی جنگ سے نکل نہیں سکا۔

نائن الیون کے بعد پاکستان ڈو مور کرتا رہا،امریکہ نے کولیشن فنڈ بھی پورا نہیں دیا، چالیس پینتالیس ارب ڈالر کی بجائے صرف پندرہ ارب ڈالر ملے، موجودہ حکومت ذمہ دار ہے۔ چار سالوں میں وزیر خارجہ ہی نہیں رہا، ٹرمپ نے تینتیس ارب ڈالر کی بات کر کے بہت چھوٹا پن دکھایا ہے۔

پاکستان کو امریکہ سے تعلقات کی پالیسی پر نظر ثانی کرنا ہو گی، اس کے علاوہ کوئی حل نہیں،اگر سرجیکل اسٹرائیک ہوتی ہے تو منہ توڑ جواب دینا چاہیئے۔متحد ہو کر جواب دینا ہے, بٹی ہوئی قوم صرف تباہی ہے۔