سابق وزیر اعظم ذوالفقارعلی بھٹو کی چالیسویں برسی کل منائی جائےگی

سابق وزیر اعظم ذوالفقارعلی بھٹو کی چالیسویں برسی کل منائی جائےگی


لاڑکانہ(24 نیوز) پاکستان پیپلز پارٹی کی بنیاد اور ملک کو پہلا متفقہ آئین دینے والے سابق وزیر اعظم ذوالفقارعلی بھٹو کی چالیسویں برسی کل منائی جائےگی، اسلامی سربراہی کانفرنس اور پاکستان کا ایٹمی پروگرام شروع کرنےکاسہرابھی ذوالفقار علی بھٹو کےسرہے۔

ذوالفقارعلی بھٹو 5 جنوری 1928 کو لاڑکانہ میں پیدا ہوئے، وہ بین الاقوامی قد آور سیاسی شخصیت کے روپ میں اُبھر کر سامنے آئے، اُن کے والد سرشاہنوازبھٹوبھی سیاسی میدان میں رہے۔ ذوالفقارعلی بھٹونےابتدائی تعلیم کےبعد1950میں برکلےیونیورسٹی کیلیفورنیاسےسیاسیات کی ڈگری حاصل کی اور اصولِ قانون میں ماسٹرزکیا، تعلیم کےبعدانہوں نےکراچی میں وکالت کاآغازکیااورایس ایم لاءکالج میں بین الاقوامی قانون پڑھانےلگے۔

ذوالفقارعلی بھٹونےسیاست کاآغاز1958میں کیااورفیلڈمارشل جنرل ایوب خان کےدورِحکومت میں وزیرتجارت، اقلیتی امور، صنعت وقدرتی وسائل اور وزیرخارجہ کےمناصب پر فائز رہے، ستمبر1965ءمیں انہوں نےاقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں پاکستان کاموقف بڑےبھرپوراندازسےپیش کیا۔

جنوری 1966ء میں ایوب خان نےاعلان تاشقندپردستخط کیے توذوالفقارعلی بھٹوبڑےدلبرداشتہ ہوئےاوراسی برس وہ حکومت سےعلیحدہ ہوگئے، اُنہوں نےپاکستان کی خارجہ پالیسی میں مسئلہ کشمیرکومرکزی حیثیت دی، اقتدارکےحصول کی لڑائی میں ملک دوٹکڑوں میں بٹ گیا۔سقوط ڈھاکہ کے بعد وہ 1971ءمیں پاکستان کے صدراورپھر1973ءمیں پاکستان کےوزیراعظم کےعہدےپرفائزہوئے۔ ملک کےدولخت ہونےکےبعدشہیدذوالفقارعلی بھٹونےاپنےدورِ اقتدارمیں بے پناہ کارنامےسر انجام دیئے۔

پیپلزپارٹی کا دورِ حکومت ختم ہونےکےبعد1977کےعام انتخابات میں دھاندلی کےسبب ملک میں حالات کشیدہ ہوئے، پانچ جولائی1977 کوجنرل ضیاء الحق نےمارشل لاءنافذکیاتوملک میں ہونیوالےمظاہروں کےنتیجےمیں قائدِعوام کودوبار نظربندکرکےرہاکیاگیا۔ ذوالفقارعلی بھٹوکوقتل کےایک مقدمہ میں گرفتارکرلیاگیا18 مارچ 1977ءکو انہیں سزائےموت سنادی گئی۔ ذ والفقار علی بھٹونےسزاکیخلاف سپریم کورٹ میں اپیل کی، جس میں3 ججزنےانہیں بری کرنے کا اور3 نےسزائےموت دینےکافیصلہ کیا۔پاکستانی سیاسی اُفق کےاس چمکتےستارےکوراولپنڈی ڈسٹرکٹ جیل میں4اپریل اُنیس سو اُناسی کو پھانسی دیدی گئی لیکن پاکستان کی سیاست آج بھی اُن کی شخصیت کےگرد گھومتی ہے۔ 

Malik Sultan Awan

Content Writer