تحریک انصاف اور ایم کیو ایم میں حکومت سازی کیلئے تحریری معاہدہ طے

تحریک انصاف اور ایم کیو ایم میں حکومت سازی کیلئے تحریری معاہدہ طے


 24نیوز :مرکز میں حکومت سازی کیلئے تحریک انصاف نے ایم کیوایم کو ساتھ ملا لیا، تاہم 24 نیوز کے سروے میں پاکستانیوں کی اکثریت نے اس اتحاد کی مخالفت کی۔

پی ٹی آئی اور ایم کیو ایم پاکستان کے رہنماؤں نے پریس کانفرنس کی جس میں جہانگیر ترین کا کہنا تھا کہ متحدہ پاکستان کے وفد نے عمران خان سے ملاقات کی ہے جس میں مختلف نکات پر اتفاق کیا گیا۔ انھوں نے بتایا کہ پی ٹی آئی منشور کے مطابق سب سے زیادہ اہمیت بلدیاتی نظام کو حاصل ہے۔ ایم کیو ایم پاکستان کی جو پٹیشن سپریم کورٹ میں ہے جس کو سپورٹ کریں گے۔

پڑھنا نہ بھولیں:فیس بک اب واٹس ایپ سے بھی مال کمائے گا

ان کا کہنا تھا کہ خیبر پختوخوا کی پولیس کی طرح سندھ میں پولیس کے حوالے سے ریفارمز سامنے لائیں گے۔ کراچی کے شہریوں نے پی ٹی آئی اور ایم کیو ایم پاکستان کو ووٹ دیئے ہیں۔ ہم کراچی کے اربن سینٹرز کی تعمیر نو کریں گے اور اس کے لیے فنانشل پیکج بھی دیں گے۔ انھوں نے بتایا کہ حیدر آباد میں یونیورسٹی بنائیں گے۔ تعلیم کے لیے پیکج رکھیں گے اور تعلیمی میدان میں ترقی کریں گے۔

یہ بھی پڑھیں:لوڈشیڈنگ کا جن پھر بے قابو

خالد مقبول صدیقی نے کہا کہ عمران خان کی دعوت پر اسلام آباد آئے۔ پی ٹی آئی اور متحدہ پاکستان کے درمیان جو معاہدہ ہوا ہے وہ جمہوریت کی بھی ضرورت تھا اور پاکستان کی بھی۔ جمہوریت اورآئین کو ترجیح دی۔ کراچی کے شہری ملکی ترقی کا ستر فیصد ریونیو دیتے ہیں۔