یمن کے سابق صدر علی عبداللہ صالح حوثی جنگجوؤں سے لڑائی کے دوران ہلاک


 صنعا(24نیوز): یمن میں ایک بار پھر انتقام کی آگ بھڑک اٹھی، حوثی باغیوں نے سابق صدر علی عبداللہ صالح کو ہلاک کرکے ان کے گھر کو بموں سے اڑا دیا۔سعودی عرب سمیت کئی ممالک نے صالح کی ہلاکت پر شدید غم و غصے کا اظہار کیا۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق یمن کے سابق صدر علی عبداللہ صالح کو حوثی جنگجوؤں نے لڑائی کے دوران ہلاک کر دیا ہے۔ یہ دعویٰ حوثی ٹیلی وژن کی جانب سے سامنے آیا ہے لیکن کسی اور ذرائع سے اس بات کی تصدیق نہیں ہو سکی ہے۔ تاہم سماجی رابطوں کی ویب سائٹس پر جاری کی گئی تصاویر سے حوثیوں کا یہ دعویٰ درست نظر آتا ہے۔ ان تصاویر میں یمن کے سابق صدر علی عبداللہ صالح کی لاش کو دکھایا گیا ہے۔

یمن کی حکومت کا تختہ الٹنے والے حوثیوں نے یمن کے سابق صدرعلی عبداللہ صالح کو ہلاک کر دیا۔اس واقعہ میں صالح کے ساتھی بھی مارے گئے۔سعودی عرب سمیت کئی ممالک نے صالح کی ہلاکت پر شدید غم و غصے کا اظہار کیا۔علی عبداللہ صالح کے قریبی ذرائع کے مطابق حملے میں صالح کے سیکیورٹی سربراہ حسین الحامدی بھی ہلاک ہو چکے ہیں۔

ایسی بھی رپورٹس آئیں کہ حوثیوں نے دارالحکومت صنعا کے زیادہ تر حصے کا کنٹرول صالح کی فورسز کے پاس ہےاورمختلف علاقوں میں دونوں گروپس کے درمیان جھڑپوں کا سلسلہ جاری ہے۔

مزید پڑھنے کیلئے:    قائم اتحاد نے یمن کےسابق صدرکی جانب سے مذاکرات کی پیشکش کا خیرمقدم کیا