علی ظفر نےمیشا شفیع کیخلاف ثبوت پیش کردیے

علی ظفر نےمیشا شفیع کیخلاف ثبوت پیش کردیے


لاہور(24 نیوز)گلوکارہ میشاشفیع کےخلاف ہتک عزت کے دعویٰ میں گلوکارعلی ظفرنےتفصیلی بیان قلمبندکرادیا، کہتے ہیں"می ٹو تحریک"کے ذریعے ان پرجنسی ہراسگی کے الزمات لگائے گئے، جس سے ان کا کروڑوں کانقصان ہوا۔

علی ظفر نے ایڈیشنل سیشن جج امجد علی شاہ کی عدالت میں ساڑھے تین گھنٹے تک بیان ریکارڈ کرایا، اس دوران جب میشا شفیع کے وکلا تھک گئے توعلی طفر نے کہا آپ کی تھکاوٹ اتارنے کیلئے آپ کو گانے سنا دیتا ہوں مگر میرا مکمل بیان قلمبند ہونے دیں، مجھے اپنے نام پر لگے داغ کو دھونا ہے، 2004 سے ملک کو ٹیکس دے رہا ہوں۔ 

علی ظفر نے بتایا کہ ہمیشہ فیملی کے ساتھ میشا شفیع سے ملاقات ہوئی، ایک منظم سازش کے تحت میشا شفیع اور اسکی چار دوست خواتین نےہراسگی کا الزام لگایا اور سوشل میڈیا پر میرے خلاف مہم چلائی۔ سوشل میڈیا تحریک "می ٹو" کو میرے خلاف غلط استعمال کیا گیا۔ اس نے استدعا کی میشا شفیع سمیت الزام لگانے والی دیگرخواتین کو عدالت میں طلب کیا جائے۔ سماعت کے بعد میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے علی ظفر نے کہا میں خود عدالت میں آیا ہوں جبکہ الزامات ثابت کرنا الزام لگانے والے کی ذمہ داری ہوتی ہے۔

اداکار اور گلوکار علی ظفر کے بیان قلمبند کرانے کے بعد عدالت نے دعوی کی مزید سماعت 15جولائی تک ملتوی کردی۔