ذہنی مریض کی  ہلاکت کامعاملہ، پولیس پیٹی بھائی کو بچانے کی کوشش میں



  لاہور(24نیوز) ڈولفن اہلکار کی فائرنگ سے ذہنی مریض کی ہلاکت کے معاملہ پر پولیس افسران نے ڈولفن اہلکار کو سپورٹ کرنا شروع کر دیا، وزیر اعلیٰ پنجاب  نے شہری کی ہلاکت کا نوٹس لے لیا۔

تفصیلات کے مطابق نواں کوٹ کے علاقے میں ذہنی مریض عمیر نے چھریوں کے وار کر کے شہریوں کو زخمی کیا،  اطلاع ملنے پر ڈولفن فورس موقع پر پہنچی جہاں ذہنی مریض نے چھری کے وار کر ڈولفن اہلکار مبشر کو بھی زخمی کر کیا، اسی دوران ڈولفن اہلکاروں نے عمیر کو پکڑنے کی کوشش کی،    ڈولفن اہلکار نے عمیر پر پیچھے سے فائرنگ کر دی اور فائرنگ کے باعث عمیر موقع پر ہی جاں بحق ہو گیا۔ پولیس نے اقدام قتل سمیت دیگر دفعات کے تحت واقع کا مقدمہ درج کر لیا جبکہ مقتول عمیر کی ہلاکت کا زکر تک نہیں کیا گیا ۔

پولیس کی جانب سے تاحال عمیر کے قتل کا مقدمہ درج نہیں کیا گیا جس سے مقتول کا پوسٹ مارٹم بھی تاخیر کا شکار ہے جبکہ پولیس نے پیٹی بھائی کو بچانے کی خاطر واقعہ کا مقدمہ ڈولفن اہلکار کی مدعیت میں درج کر لیا ہے ، ڈولفن اہلکاروں پرحملےکامقدمہ اقدام قتل کی دفعات کےتحت درج کیا گیا جبکہ ویڈیو ثبوت کےباوجودعمیرکےقتل کامقدمہ درج نہ کیا،مقتول کے لواحقین نے پولیس کی مبینہ فائرنگ کیخلاف لاش کے ہمراہ بابو صابو انٹر چینج پر احتجاج کیا جس کے باعث ٹریفک کی روانی متاثر ہوئی۔

لواحقین کے مطابق عمیر ذہنی طور پر معذور تھا اور اسے مرگی کے دورے پڑتے تھے، ڈولفن فورس کے اہلکاروں نے جان بوجھ کر فائرنگ کی,وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے ڈولفن فورس کے اہلکار کی فائرنگ سے شہری کی ہلاکت کا نوٹس لے لیا۔

جبکہ ایف آئی آر کے متن کے مطابق اہلکاروں نےاپنےدفاع میں گولی چلائی اور ڈولفن اہلکار نے عمیرکوڈرانےکیلئےزمین پر فائرکیا۔

M.SAJID KHAN

CONTENT WRITER