امریکا کا پاکستان کی سیکورٹی معاونت روکنے کا اعلان


واشنگٹن (24نیوز) امریکا نےپاکستان کی سیکورٹی معاونت اور فوجی سازوسامان معطل کرنے کا اعلان کردیا، ترجمان امریکی محکمہ خارجہ کا کہنا ہے کہ حقانی نیٹ اور دیگر افغان طالبان کے خلاف کارروائی تک معاونت معطل رہے گی۔

تفصیلات کے مطابق امریکی محکمہ خارجہ نے پاکستان کو دی جانے والی سیکورٹی معاونت کا اعلان کرتے کہا کہ پابندی افغان طالبان اور حقانی نیٹ ورک کے خلاف فیصلہ کن کارروائی تک رہے گی,ہم فی الوقت ہم پاکستان کی سیکورٹی کے لیے کی جانے والی معاونت پر پابندی لگا رہے ہیں، یہ پابندی اس وقت تک رہے گی جب تک پاکستان ، افغان طالبان اور حقانی نیٹ ورک کے خلاف فیصلہ کن کارروائی نہیں کرتا۔

ترجمان امریکی محکمہ خارجہ نے پاکستان کو خطے میں دہشت گردی سے سب متاثرہ ملک بھی قرار دیا اور ساتھ کہا کہ خود پاکستان دہشت گردی کے خلاف وہ کچھ نہیں کر رہا جو اسے کرنا چاہیے۔

بلاشبہ پاکستان سے امریکا کے تعلقات اہمیت کے حامل ہیں,کیوں کہ پاکستان اور امریکا مل کر ہی دہشت گردی کا خاتمہ کرسکتے ہیں.

یہ بات بالکل واضح ہے کہ پاکستان خطے میں موجود دیگر تمام ممالک کی نسبت سب سے زیادہ دہشت گردی متاثرہ ملک ہے وہ اس حقیقت سے آگاہ ہیں پر ویسے اقدامات نہیں لیے جارہے جیسے انہیں دہشت گردی کے خاتمے لیے لینے چاہیئے۔

پاکستان پر پابندیا کا بار لادنے کے بعد امریکی محکمہ خارجہ کی ترجمان نے یہ بھی جتا دیا کہ جب جب حساس نیشنل سیکورٹی کے معاملات بات آئی تو امداد سے متعلق فیصلے حالات کے مطابق بدلے بھی جا سکیں گے۔

ہم فوجی سازو سامان اور سیکورٹی سے متعلق فنڈزنہیں دیں گے جب تک کہ وہ قانون پر پورے نہیں اُترے گے,جہاں تک نیشنل سیکورٹی کے معاملات کا تعلق ہے یقیناً حالات کے مطابق کہیں کہیں نرمی بھی برتی جا سکے گی ۔

ویڈیو دیکھیں: