سپریم کورٹ نے4سینیٹرز کا نوٹیفکیشن روکنے کا حکم دیدیا

سپریم کورٹ نے4سینیٹرز کا نوٹیفکیشن روکنے کا حکم دیدیا


اسلام آباد (24نیوز) سپریم کورٹ آف پاکستان نے دوہری شہریت رکھنے والے نو منتخب سینیٹر کا نوٹیفکیشن جاری کرنے سے الیکشن کمیشن کو روک دیا ہے اور چیف جسٹس نے واضح کیا ہے کہ دوہری شہریت رکھنے والے لوگ سینیٹر نہیں بن سکتے ۔ 

چیف جسٹس کی سربراہی میں فل بینچ نے دوہری شہریت کیس کی سماعت کی جس دوران اٹارنی جنرل نے بتایاکہ دوہری شہریت رکھنے والوں میں چودھری سرورحسین، ہارون اختر،مسز نزہت اور سعدیہ عباسی شامل ہیں، یہ لوگ دوہری شہریت چھوڑ کر حلف اٹھا سکتے ہیں.

یہ بھی پڑھئے: سینیٹ الیکشن، ووٹرز کو 30،30کروڑ کے تحفائف دیئے گئے، شاہد شنواری

چیف جسٹس نے کہاکہ ایسا نہیں ہوسکتا، شہریت چھوڑنے کا ثبوت دینا چاہیے ، ایسا بھی ہوسکتا ہے کہ سینیٹرشپ ختم ہونے کے بعد دوبارہ دوہری شہریت رکھ لیں، سینیٹرز کو مطمئن کرنا ہوگا کہ دوہری شہریت ترک کرچکے ہیں۔ 

عدالت نے سیکریٹری الیکشن کمیشن کو حکم دیا کہ فیصلے تک چاروں افراد کا نوٹیفکیشن جاری نہ کیاجائے اور سماعت ملتوی کردی۔