جمہوری عمل کے ذریعہ عوام کو اپنا نمائندہ منتخب کرنے کا حق حاصل ہے:نوازشریف


اسلام آباد(24نیوز) سپریم کورٹ میں 62 ون ایف کی تشریح کا معاملہ، سابق وزیراعظم نواز شریف نے جواب داخل کرا دیا، نااہلی تا حیات یا نہیں، نواز شریف نے عدالتی کارروائی کا حصہ نہ بننے کا فیصلہ کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق نواز شریف نے 62 ون ایف کی تشریح کیس سے متعلق جواب داخل کرا دیا۔ نواز شریف نے جواب میں مؤقف اختیار کیا کہ عدالتی کارروائی کا حصہ نہیں بننا چاہتا۔جواب میں کہا گیا ہےکہ درخواست گزار یا مقدمہ میں فریق نہیں، فریق ہوتا تو مقدمہ کی کارروائی سے الگ ہونے کی درخواست کرتا۔ جسٹس عظمت سعید اور جسٹس اعجاز الا احسن اپنی رائے دے چکے۔ طے شدہ اصول کے مطابق انتخابات میں حصہ لینا بنیادی حق ہے۔ آئین کے آرٹیکل 62 ون کے تحت تاحیات نا اہلی نہیں ہو سکتی۔ اس میں مدت کا تعین نہیں۔ نااہلی صرف اس الیکشن کیلئے ہوگی جس کو چیلنج کیا گیا ہو۔

نواز شریف نے اپنے جواب میں مزید کہا کہ جمہوری عمل کے ذریعے عوام کو اپنا نمائندہ منتخب کرنے کا ناقابل تنسیخ حق حاصل ہے۔ ایسا نہیں کہ منتخب نمائندوں کو نکال کر عوام کو منتخب کرنےکے لیے ایک مخصوص فہرست دے دی جائے۔