امن کے پیامبر نوجوت سنگھ سدھو کےسر کی قیمت مقرر کر دی گئی


نئی دہلی(24نیوز) ہندو انتہا پسند تنظیم نے نوجوت سنگھ سدھو کا سرقلم کرنے والے کے لئے ایک کروڑ انعام کا اعلان کردیا،انتہاپسندتنظیم ہندو یووا کے بانی وزیراعلیٰ یوپی آدیتیہ ناتھ ہیں۔

تفصیلات کے مطابق انتہا پسند تنظیم ہندویووا کے سربراہ نے نوجوت سنگھ سدھو کے سر کی قیمت مقرر کردی، امن کے پیامبر نوجوت سنگھ سدھو کے سر کی قمیت ایک کروڑ مقرر کی گئی، ہندویوا کے سربراہ کی جانب سے نوجوت سنگھ سدھو کے دورہ پاکستان اور کرتار پور راہداری بارڈر کی تقریب میں شرکت کرنے پر بہت زہر افشانی کی گئی ہے،  ہندو یوا کا سربراہ اترپردیش میں نوجوت سنگھ سدھو کے خلاف نعرے بازی بھی کرتا رہا۔

انتہا پسند ہندو یوا گروہ اتر پردیش کے وزیراعلیٰ یوپی آدیتیہ ناتھ نے پندرہ سال پہلے منایا تھا، ایک شدت پسند گروہ نے وزیراعلیٰ کے بعد نوجوت سنگھ سدھو کے بارے یہ اعلان کیا ہے، نوجوت سنگھ سدھو نے وزیراعلیٰ یوپی آدیتیہ ناتھ کے بارے میں کہا تھا کہ کچھ لوگوں کو امن کی آشا اچھی نہیں لگتی، جس پرہندو انتہا پسند تنظیم نے سدھو کا سرقلم کرنے والے کے لئے ایک کروڑ انعام کا اعلان کیا ہے ۔

انتہا پسند تنظیم ہندو یووا کے صدر ترون سنگھ نے کہا کہ ” اگر سدھو آگرہ آئے تو میں ان کے ٹکڑے ٹکڑے کردوں گا،ترون سنگھ نے سدھو کو غدار قرار دیتے ہوئے کہا کہ سدھو کو پاکستان جانا چاہیے ، ہم اسے ہندوستان میں نہیں رہنے دیں گے۔