تختِ رائیونڈ گرانے کیلئے کپتان اپنے کھلاڑی میدان میں لے آئے

تختِ رائیونڈ گرانے کیلئے کپتان اپنے کھلاڑی میدان میں لے آئے


لاہور (24 نیوز) عام انتخابات 2018 کے لیے پاکستان تحریک انصاف نے ابھی سے امیدواروں کا فیصلہ کر لیا۔ معرکہ لاہورمیں چھ قومی اور 14صوبائی اسمبلی کی نشستوں کے لیے امیدوار فائنل کر لیے گئے۔

24 نیوز کے مطابق تخت رائے ونڈ گرانے کے لئے تحریک انصاف نے پلان تیار کر لیا۔ ن لیگ کا گڑھ تصور کیے جانے والے لاہور کو فتح کرنے کے لیے پی ٹی آئی مضبوط امیدوار میدان میں اتارے گی۔ پہلے مرحلہ میں قومی اسمبلی کے چھ اور صوبائی اسمبلی کے حلقوں کے لیے 14ناموں کو فائنل کر لیا گیا۔

یہ بھی پڑھئے: آصف علی زرداری نے نوازشریف کو منافق، مفاد پرست سیاستدان قرار دے دیا 

ذرائع کے مطابق عمران خان حلقہ 129سے الیکشن میں حصہ لیں گے۔ این اے 125 سے ڈاکٹر یاسمین راشد، این اے 128 سے اعجاز ڈیال، این اے 131 سے علیم خان، این اے 132 سے منشاء سندھو میدان میں اتریں گے۔ این اے 133 سے اعجاز چودھری اور این اے 135 سے کرامت کھوکھر امیدوار ہوں گے۔پی پی 159 سے ڈاکٹر مراد راس، پی پی 160 سے محمود الرشید، پی پی 161 سے شعیب صدیقی، پی پی 164 سے چودھری یوسف میو کے حق میں قرعہ نکلا۔

پی پی 167 سے سرفراز کھوکھر، پی پی 169 سے چودھری امین اور پی پی 172 رانا جاوید عمر معرکہ میں حصہ لیں گے۔ صوبائی اسمبلی کے حلقہ پی پی 144 سے یاسر گیلانی، پی پی 149سے جاسم شریف، پی پی 151 سے میاں اسلم اقبال میدان میں اتریں گے۔ پی پی 153 سے ڈاکٹر نوشین حامد، پی پی 157 سے علیم خان، پی پی 158 سے حامد سرور کا ن لیگی امیدواروں سے ٹاکرا ہو گا۔

پڑھنا نہ بھولئے:خود احتسابی؟خیبر پختونخوا حکومت نے میرٹ کی دھجیاں اڑادیں 

ذرائع کے مطابق آئندہ عام انتخابات میں بلاشبہ پاکستان تحریک انصاف کی پوزیشن مستحکم ہے لیکن پاکستان مسلم لیگ ن کے گڑھ میں مقابلہ اتنا بھی آسان نہں ہو گا۔ ایک طرف عمران خان اور پی ٹی آئی کی دھوم ہے تو دوسری جانب سے ان کی پالیسیاں ان کو کمزور بھی بنا رہی ہیں۔ جس کے باعث بعض حلقوں میں پی ٹی آئی کو دباﺅ کا سامنا ہو سکتا ہے۔