چیف جسٹس نے چیئرمین سی ڈی اے کی تقرری کانوٹس لے لیا، ریکارڈ سمیت طلب

چیف جسٹس نے چیئرمین سی ڈی اے کی تقرری کانوٹس لے لیا، ریکارڈ سمیت طلب


اسلام آباد(24نیوز) سپریم کورٹ نے چئیرمین سی ڈی اے کی تقرری کانوٹس لے لیا، چیئرمین کو رکارڈ سمیت طلب کرلیا، چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ 50 سال سے سی ڈی اے قوانین نہیں بنے،پھر اعتراض کیاجاتاہے عدالت فعال ہوگئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں غیر قانونی شادی ہالوں سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس نے چئیرمین سی ڈی اے کی تقرری سے متعلق تمام ریکارڈ طلب کر لیے۔کہا گیا کہ بتایاجائے کیاکابینہ نے چئیرمین سی ڈی اے کی منظوری دی؟  عدالت نے سی ڈی اے بورڈ اجلاس منگل کو بلانے کا بھی حکم دیا۔ چیف جسٹس نے کہا دیکھیں یہ شادی ہال ریگولر ہوسکتے ہیں۔ کیاسی ڈی اے نے شادی ہالز کونوٹس دئیے ہیں؟ جس پر وکیل سی ڈی اے نےبتایا کہ سی ڈی اے نے بورڈ میٹنگ کرنی ہے۔ عدالت نے بدھ تک رپورٹ طلب کرلی۔

علاوہ ازیں چیف جسٹس نے کہا 50 سال سے سی ڈی اے قوانین نہیں بنے۔ اعتراض کیاجاتاہے عدالت فعال ہوگئی ہے۔ سناہے آپ کی چئیرمین شپ کو چیلنج کیاگیاہے۔آپ کاتقررکس نے کیاہے؟ جس پر چئیرمین سی ڈی اے عثمان باجوہ بولےانکی تقرری وفاقی حکومت نے کی۔ چیف جسٹس نے کہا پبلک آفس میں اہل لوگ ہونے چاہیے۔ پسند ناپسند نہیں ہونی چاہیے۔جس کے بعد سماعت بدھ تک ملتوی کردی گئی۔