چہ مگوئیاں سچ ثابت، برطانوی وزیر اعظم کی کابینہ میں اکھاڑ پچھاڑ

چہ مگوئیاں سچ ثابت، برطانوی وزیر اعظم کی کابینہ میں اکھاڑ پچھاڑ


لندن(24نیوز) برطانوی وزیراعظم تھریسامے نے کابینہ میں ردوبدل کر دی، برینڈن لوئیس کنزرویٹوپارٹی کےنئےچیئرمین مقرر کردیے گئے جبکہ جیمز کلیورلی کو ڈپٹی چیئرمین مقرر کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق کئی روز سے ٹوری پارٹی کی کابینہ میں ردوبدل کی چہ مگوئیاں سچ ثابت ہوگئیں ۔ کوئی پارٹی سے مستعفی ہوا تو کسی کا پارٹی عہدہ ہی بدل گیا۔

وزیراعظم تھریسامے کے کابینہ میں ردوبدل کے اعلان سے قبل ہی شمالی آئرلینڈ سیکرٹری جیمز بروکنشائر مستعفی ہوگئے۔ خبر ابھی منظر عام پر آئی ہی تھی کہ سوشل میڈیا پر کرس گیلنگ کے پارٹی چیئرمین کی خبر منظرعام پر آگئی۔

مبارکباد کا سلسلہ شروع ہوا ہی تھا کہ ٹوری پارٹی نے تردید کردی کہ پارٹی چیئرمین کرس گلیلنگ نہیں برینڈن لوئیس ہیں جبکہ پارٹی ڈپٹی چیئرمین جیمز کلیورلی کو مقرر کیا گیا ہے۔

گیلنگھم اور رینھم سے ممبر پارلیمنٹ رحمان چشتی کو وائس چیئرفور کیمونٹیز مقررکیا گیا ہے۔

ٹین ڈاؤننگ کے مطابق امبر رڈ سیکرٹری داخلہ جبکہ فلپ ہیمنڈ چانسلر آف دا ایکس چیکر رہیں گئے۔ علاوہ ازیں سابق چیئرمین پارٹی سر پیٹرک نے کابینہ کو الوداع کہہ دیا۔

جسٹس سیکرٹری ڈیوڈ لڈانگٹن کو چانسلر آف دا ڈچی آف لنکاسٹر اور منسٹر آف کیبنٹ مقرر کیا گیا ہے۔ وزیراعظم ٹریزامے کابینہ میں ردوبدل کے اعلان کے بعد نئی ٹیم کے ہمراہ ٹین ڈاؤننگ کے باہر کچھ دیر کے لیے میڈیا کے سامنے آئیں۔

بریگزٹ کے اگلے مرحلے کے آغاز سے قبل کابینہ میں ردوبدل درحقیقت ملک میں اٴْن ووٹروں کو اپنی جانب متوجہ کرنے کی کوشش ہے جنہوں نے گزشتہ برس ہونے والے انتخابات میں ٹوری پارٹی کو دھچکا لگا تھا۔ سیاسی حلقوں اور میڈیا پر بحث جاری ہے۔