وزیراعلیٰ بلوچستان کیخلاف تحریکِ عدم اعتماد پیش،ووٹنگ آج ہوگی

وزیراعلیٰ بلوچستان کیخلاف تحریکِ عدم اعتماد پیش،ووٹنگ آج ہوگی


  بلوچستان (24نیوز) بلوچستان کے سرد موسم میں سیاسی جدت بڑھ گئی۔ وزیراعلیٰ ثنااللہ زہری کو کرسی بچانا مشکل ہوگیا۔ان کے خلاف تحریک عدم اعتماد آج پیش ہوگی،کامیابی اورناکامی کے امکانات ففٹی ففٹی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق سینیٹ کے الیکشن سے پہلے بلوچستان میں نئی سیاسی صف بندی جاری ہے اور وزیراعلیٰ بلوچستان کے خلاف تحریکِ عدم اعتماد پیش کردی گئی ہے، جس پرووٹنگ آج ہوگی۔

حکومت اوراپوزیشن دونوں طرف سے کامیابی کے دعوے کئے جارہے ہیں لیکن اصل صورتحال ووٹنگ کے بعد ہی واضح ہوسکے گی۔

صورتحال کی سنگینی کااندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ وزیراعلیٰ ثنااللہ زہری کے خلاف تحریکِ عدم اعتماد ناکام بنانے کیلئے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے خودبلوچستان میں ڈیرے ڈال دیئے ہیں، اور رابطوں کا سلسلہ جاری ہے، انہوں نے سرداریعقوب ناصر سے ملاقات کی جبکہ جام کمال کوسرفرازبگٹی کومنانے کا ٹاسک سونپ دیا ہے۔

وزیراعظم نے گورنرہاؤس میں ایک اجلاس کی صدارت بھی کی، جس میں حکومتی اتحادی ارکان بھی شریک ہوئے لیکن منحرف لیگی ارکان نہ پہنچے، جس نے ن لیگ کی پریشانی اوربھی بڑھادی ہے.

اُدھرتحریک کی کامیابی کی صورت میں نئے قائدایوان یعنی وزیراعلیٰ کیلئے تین امیداوربھی میدان میں آگئے ہیں، جن میں صالح بھوتانی، سرفرازبگٹی اورچنگیز خان مری شامل ہیں.

اسپیکربلوچستان اسمبلی نے آج کے اجلاس کا ضابطہ اخلاق جاری کردیا ہے،اجلاس کی براہ راست کوریج کی اجازت نہیں ہوگی اورکوئی بھی ایوان میں موبائل فون نہیں لے کرآسکے گا۔